مرکزی مینیو کھولیں

جزائر لکادیپ یا لکشادیپ بحیرہ عرب میں واقع کئی جزائر کا مجموعہ ہے جن کا کل رقبہ 32 مربع کلومیٹر ہے۔ یہ جزائر بھارت کی ریاست کیرالہ کے ساحل سے 200 سے 300 کلومیٹر دور واقع ہیں۔

لکشادیپ
ലക്ഷദ്വീപ്
لکادیو
متحدہ عملداری
کواراتی میں ایک ساحل
کواراتی میں ایک ساحل
لکشادیپ
مہر
India location map 3.png
ملک Flag of India.svg بھارت
خطہ جنوبی ہند
قیام 1 نومبر1956
دار الحکومت کواراتی
حکومت
 • منتظم راجیش پرساد
رقبہ
 • کل 32 کلو میٹر2 (12 مربع میل)
رقبہ درجہ 7
آبادی (2011 مردم شماری)
 • کل 64,473
 • کثافت 2,000/کلو میٹر2 (5,200/مربع میل)
زبانیں
 • رائج زبانیں ملیالم، جزری، محل
 • دفتری زبان ملیالم، انگریزی[1]
منیکوئی جزیرہ میں محل زبان (دیویہی) بولی جاتی ہے۔
نسلیت
 • نسلی گروہ ≈84.33% ملیالی
≈15.67% محلی
منطقۂ وقت بھارتی معیاری وقت (UTC+5:30)
آیزو 3166 رمز آیزو 3166-2:IN
ضلع جات 1
عظیم ترین شہر آندروت
HDI Increase2.svg
0.796
HDI Year 2005
HDI Category high
ویب سائٹ www.lakshadweep.gov.in
لکشادیپ کا ایک خوبصورت جزیرہ
Lakshadweep in India (disputed hatched).svg

جزائر لکشادیپ کی کل آبادی 60 ہزار 595 ہے جبکہ دار الحکومت کواراتی ہے۔

عظیم مسلم سیاح ابن بطوطہ نے اپنے سفرنامے میں جزائر لکشادیپ کا ذکر کیا ہے۔ 1787ء میں ان جزائر پر ٹیپو سلطان کی حکومت قائم ہوئی اور تیسری جنگ میسور کے بعد یہ برطانیہ کے قبضے میں آ گئے۔

تاریخترميم

 
لکشادیپ کا نقشہ

لکشادیپ کے باشندے کیرلا کے لوگوں سے نسلی مشابہت رکھتے ہیں۔ 8 ویں صدی سے یہ جزیرے اسلام کے زیر اثر رہے ہیں۔ 1498ء میں پرتگیزیوں نے یہاں ایک قلعہ تعمیر کیا۔ لیکن یہاں کے باشندوں نے ان کو وہاں سے نکلوا دیا۔ 1787ء میں جزیرۂ امین سمیت کچھ جزیرے ٹیپو سلطان کے زیرِ حکومت رہے۔

جغرافیہترميم

 
لکشادیپ جزائر کا نقشہ
 
لکشادیپ کا غیر آباد جزیرہ
 
لکشادیپ کا سیٹلائٹ منظر
 
روشنی کا مینار

لکشادیپ میں کل 39 جزیرے ہیں۔ ان میں دس جزائر میں آبادی ہے اور 17 جزیرے غیر آباد ہیں۔ کواراتی، منیکوئی، امینی، اگاتی وغیرہ اہم جزیرے ہیں۔ 2001ء کے مردم شماری کے مطابق کل آبادی 60595 ہے۔[2]

زراعتترميم

لکشادیپ کی اہم پیداوار ناریل ہے۔ 2598 ہیکٹیر اراضی میں ناریل کی زراعت ہے۔

جزائرترميم

لکشادیپ کے جزائر دو طرح کے ہیں۔

  1. آباد جزائر
  2. غیر آباد جزائر
  • آباد جزائر میں اگاتی، امینی، آندروت، بنگارم، بیترا، چیتلات، کڈامت، کواراتی، کلپینی، کلتان، منیکوئی وغیرہ ہیں۔
  • غیر آباد جزائر میں کلپِٹی، تِنّاکرا، چیریا پرَلی، ولیا پرَلی، پکشی پِٹی (طیوری پناہ گاہ)، سوہیلی ولیا کرا، سُہیلی چیریا کرا، تِلاکم، کوڈی تلا، چیریا پِٹی، ولیا پِٹی، چیریام، وِرِنگِلی، ولِیا پانی، چیرِیا پانی وغیرہ اہم ہیں۔

مذہبترميم

لکشادیپ کے مذاہب [3]
مذہب فیصد
اسلام
  
93%
ہندو
  
4%
دیگر
  
3%

زبانترميم





 

لکشادیپ کی زبانیں 2001ء میں[4]

  ملیالم بشمول جزری بولی (85.00%)
  دیگر بشمول دیویہی اور محل (15.00%)

لکشادیپ کی زبانوں میں ملیالم، جزری اور محل زبان اہم ہیں۔[5] شمالی جزائر کے لوگ عام طور پر ملیالم اور اس کی بولیاں بولتے ہیں۔ جنوب میں واقع منیکوئی کے لوگ محل زبان بولتے ہیں جو دیویہی زبان کی بولی ہے۔

حوالہ جاتترميم

  1. "Language Policy and Linguistic Minorities in India: An Appraisal of the ... - Thomas Benedikter - Google Books"۔ Books.google.com۔ مورخہ 26 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 2015-02-25۔
  2. "Location,Area and Population"۔ lakshadweep.nic.in۔ اخذ شدہ بتاریخ 1 اگست 2012۔
  3. "Location"۔ Lakshadweep.nic.in۔ اخذ شدہ بتاریخ 2013-07-08۔
  4. "Commissioner Linguistic Minorities (originally from Indian Census, 2001)"۔ مورخہ 8 اکتوبر 2007 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔
  5. [1][مردہ ربط]

بیرونی روابطترميم