مرکزی مینیو کھولیں

پاکستان تحریک انصاف

پاکستانی سیاسی جماعت

پاکستان تحریک انصاف پاکستان کی موجودہ حکمراں سیاسی جماعت ہے۔ پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ وزیر اعظم پاکستان عمران خان ہیں۔ "انصاف، انسانیت اور خود داری"جماعت کا نعرہ ہے۔جو براڈفورڈ یونیورسٹی کے چانسلر بھی رہے چکے ہیں۔ عمران خان نے پولیٹیکل سائنس، اکنامکس اور فلسفہ میں ماسٹرز کی ڈگریاں حاصل کی ہوئی ہیں۔ کچھ عرصہ قبل عمران خان کی طرف سے پاکستان کے موجودہ نظام کی خرابیوں کو دور کرنے کے لیے ایک حل پیش کیا گیا تھا ۔ اس کے مندرجہ ذیل تین نکات ہیں:

  1. آزاد الیکشن کمیشن
  2. آزاد عدلیہ
  3. آزاد احتساب بیورو
پاکستان تحریک انصاف
چیئرمین عمران خان
سیکرٹری جنرل ارشد داد
نعرہ انصاف، انسانیت، خودداری
تاسیس 25 اپریل 1996ء (1996ء-04-25)
صدر دفتر سیکٹر G-6/4
اسلام آباد، پاکستان
اسٹوڈنٹ ونگ انصاف اسٹوڈنٹ فیڈریشن
یوتھ ونگ انصاف یوتھ ونگ
وومن ونگ انصاف وومن ونگ
رکنیت  (2013) 10 ملین (عالمی)
نظریات فلاحیت[1][2][3]
اسلامی جمہوریت
اشتمالیت
سیاسی حیثیت مرکز اور تمام صوبے
ایوان بالا
17 / 104
ایوان زیریں
156 / 342
پنجاب اسمبلی
183 / 371
خیبر پختونخوا اسمبلی
89 / 124
سندھ اسمبلی
30 / 168
بلوچستان اسمبلی
7 / 65
آزاد جموں و کشمیر اسمبلی
2 / 41
گلگت بلتستان اسمبلی
1 / 33
خیبر پختونخوا مقامی حکومت
395 / 1,484
جماعت کا پرچم
Pakistan Tehreek-e-Insaf flag.PNG
ویب سائٹ
باضابطہ ویب سائٹ
سیاست پاکستان

پارٹی اس حل پر عمل درآمد کے لیے کوششیں جاری رکھے ہوئے تھی ۔ تحریک انصاف اس وقت اپوزیشن کی ایک جماعت کی حیثیت سے اپنا کردار ادا کر رہی تھی ۔پھر بالآخر 2018 کے عام انتخابات میں تحریک انصاف حکمراں جماعت بن کر سامنے آئی اور عمران خان وزیر اعظم بنے ۔

2002ء کے انتخاباتترميم

20 اکتوبر 2002ء کے قانون سازی اسمبلی کے انتخابات میں اس پارٹی کو 0.8 فیصد ووٹ ملے اور ان انتخابات میں کل 272 ارکان میں سے ایک ممبر تحریک انصاف کی طرف سے منتخب ہوا۔ اسی طرح صوبائی انتخابات میں صوبہ سرحد کی طرف سے تحریک انصاف کا ایک رکن منتخب ہوا۔

2008ء کے انتخاباتترميم

2008 کے عام انتحابات میں پاکستان تحریک انصاف نے حصہ نہیں لیا۔

2013ء کے انتخاباتترميم

2013 کے انتخابات میں تحریک انصاف ایک مضبوط پارٹی بن کر ابھری، قومی اسمبلی میں اس کی اچھی خاصی نشتیں ہیں، جبکہ صوبہ خیبر پختونخوا میں اس پارٹی کی حکومت ہے، جبکہ ،پنجاب میں دوسری اور سندھ میں تیسری بڑی پارٹی بن کر ابھری۔ عام انتخابات میں ووٹوں کے لحاظ سے دوسری اور سیٹوں کے لحاظ سے تیسری بڑی پارٹی بنی۔ عمران خان کا کہنا ہے کہ الیکشن میں دھاندلی ہوئی تھی ورنہ وفاق میں بھی تحریک انصاف کی حکومت ہوتی، اس بات نے بعد ازاں آزادی مارچ کی شکل میں ایک نیا رخ اختیار کر لیا۔

بیرونی روابطترميم

حوالہ جاتترميم

  1. Sidrah Moiz Khan "Pakistan's creation pointless if it fails to become Islamic welfare state" "Imran Khan said on Wednesday that Pakistan's creation had been pointless if the country fails to become an Islamic welfare state" 27 جون 2012.
  2. Marcus Michaelsen "Pakistan's dream catcher" "Iqbal's work has influenced Imran Khan in his deliberations on an "Islamic social state" 27 مارچ 2012.
  3. "Constitution of Pakistan Tahreek e Insaaf"