پیغمبر اسلام کی حیات میں اور اس کے بعد بہت سے لوگوں نے نبوت کا جعلی دعویٰ کیا جبکہ نبوت محمد ﷺ پر ختم ہوچکی ہے۔ اس صفحہ پر ترتیب وار ان کذابین اور دجالین کے نام موجود ہیں جنہوں نے نبوت کا جعلی دعویٰ کیا۔ اس فہرست کی ترتیب میں مندرجہ ذیل اصولوں کی پیروی کی گئی ہے۔

الف۔ صرف ان کذابیین کو گنا گیا ہے جنہوں نے مسلمانی کی حالت میں ایسا دعویٰ کرکے کفر اختیار کیا یعنی غیر مسلموں میں اگر کسی نے نبوت کا جعلی دعویٰ کیا ہے تو اس کا نام اس فہرست میں شامل نہیں کیا گیا۔

ب۔ کذابین میں سے صرف ان لوگوں کو لیا گیا ہے جنہوں نے نا ہی اس دعویٰ سے کوئی توبہ کی نا ہی کسی نے ان کا اس دعویٰ سے رجوع نقل کیا۔ یہاں تک کہ اللّٰہ تعالیٰ نے ان کو ہلاک کر دیا یعنی اگر کسی نے نبوت کا جعلی دعویٰ کیا اور پھر رجوع و توبہ کرلی تو اس کا نام بھی اس فہرست میں موجود نہیں ہوگا۔

فہرست کذابینترميم

اس فہرست میں اس شرط کا خیال رکھا گیا ہے کہ صرف ان کذابین یا دجالین کے نام لکھے جائیں جنہوں نے نا اپنے موقف سے رجوع کیا نا توبہ کی یہاں تک کہ اللّٰہ تعالیٰ نے ان کو ہلاک کر دیا۔ جبکہ یہ جاننا چاہئیے کہ یہ سب وہ ہیں جنہوں نے امت میں ہوتے ہوئے ایسا دعویٰ کرکے ارتداد اختیار کیا ان لوگوں کے نام درج نہیں کیے جنہوں نے یہود یا نصاریٰ یا کسی اور قوم سے ایسا دعویٰ کیا ہو اور پھر ہلاک ہوئے۔ اس اعتبار سے یہ فہرست یوں ہے۔

مسیلمہ کذاب

2۔ عبہلہ بن كعب بن غوث العنسی المعروف اسود العنسی

حارث دمشقی

مغیرہ بن سعید

بیان بن سمعان

صالح بن طریف برغواطی

اسحاق اخرس

استاد سیس

علی بن محمد خارجی

10۔ حمدان بن اشعث قرمطی

11۔ علی بن فضل یمنی

12۔ حامیم بن من اللہ

13۔ عبد العزیز باسندی

14۔ ابو القاسم احمد بن قسی

15۔ عبد الحق بن سبعین مرسی

16۔ بایزید روشن جالندھری

17۔ میر محمد حسین مشہدی

18۔ سید علی محمد باب

19۔ بہاء اللہ

20۔ مرزا غلام احمد قادیانی

21۔ محمود پسی خانی گیلانی

22۔ ریاض احمد گوہر شاہی

23۔ یوسف کذاب

24۔ احمد عیسی