برمنگھم کے مختلف منظر

برمنگھم (انگریزی: Birmingham) ایک شہر اور میٹروپولِیٹن بَرو ہے، جو انگلستان کی کاؤنٹی ویسٹ مِڈلَینڈز میں واقع ہے۔ لندن کے باہر سب سے زیادہ آباد شہر ہے، اصل شہر کی آبادی جو ہے دس لاکھ سے زائد۔ برمنگھم کے ہم پہلو چھوٹے شہروں کو شامل کر کہ، پورے مہانگری علاقے کی آبادی قریباً پچیس لاکھ ہے۔

وسطی ادوار میں برمنگھم میانہ بڑائی کا بازاری شہر تھا، اور اٹھارویں صدی میں صنعتی انقلاب کے دوران بین الاقوامی طور پر نامور بنا۔ اس وقت برمنگھم سائنس، ٹیکنولوجی، اور اقتصادی انتظام میں عالمی ترقی کی اگوائی کر رہا تھا، اور جدّتوں کا ایک سلسلہ کا ذمہ دار تھا جنہوں نے جدید صنعت یافتہ سماج کی بنیاد قائم کی۔

آج کل برمنگھم ایک اہم بین الاقوامی تجارتی مرکز ہے اور ٹرانسپورٹ، ریٹیل نیز تقریبوں اور کونفرنسوں کا نابھ ہے۔ اس میں واقع چھ یونورسٹیاں ہیں، جس کے سبب وہ لندن کے علاوہ اعلیٰ تعلیم اور علمی تحقیقات کا ملک میں سب سے بڑا مرکز ہے۔ برمنگھم کے اہم ثقافتی ادارے بین الاقوامی طور پر مشہور ہیں اور شہر میں سنگیت، فنون، ادب، اور باورچی گری کی بوقلموں اور مؤثّر سِینیں ہیں۔

تاریخترميم

برمنگھم 1166ء میں ایک چھوٹے قصبے کی روپ میں شروع ہوا۔ کئی صنعتیں برمنگھم میں قائم ہوئیں اٹھارویں اور انیسویں صدیوں کے دوران۔ ان میں شامل تھیں ہتھیار اور کھانے کی چیزیں بنانے کی صنعتیں۔ برطانیہ کی مہارانی کُوئین وِکٹوریا نے 1889ء میں برمنگھم کو شہر کا رُتبہ دیا۔ برمنگھم نے پہلی اور دوسری عالمی جنگ کی کوشش میں ایک اہم کردار ادا کیا۔ تاہم آج کل، عالمی جنگ کے بعد کی نسبت میں، کافی کم صنعتیں رہتی ہیں۔