مرکزی مینیو کھولیں

نوبل گیسوں سے مراد وہ گیسیں ہیں جو دوری جدول (Periodic table) کا آخری گروپ یعنی اٹھارواں گروپ بناتی ہیں۔ جس طرح نوبل دھاتیں کیمیائی اعتبار سے بہت کم عمل پزیر ہوتی ہیں اسی طرح نوبل گیسیں بھی انتہائی کم عاملیت کی حامل ہوتی ہیں۔ یہ گیسیں انیسویں صدی کے بالکل اختتام پر دریافت ہوئیں اور 1902 میں دوری جدول میں "گروپ صفر" کے تحت شامل کی گئیں۔ انہیں غیر عامل گیسیں (inert gases) بھی کہا جاتا تھا کیونکہ ان کی دریافت کے پچاس ساٹھ سال بعد بھی انکا کوئیِ کیمیائِ عمل دریافت نہ ہو سکا تھا۔
قدرتی طور پر دستیاب درج ذیل 6 گیسیں اس گروپ میں شامل ہیں۔ ساتویں گیس ununoctium مصنوعی طور پر نیوکلیئر ری ایکٹر میں بنائی جاتی ہے۔

  1. ہیلیئم
  2. نیون
  3. آرگون
  4. کرپٹون
  5. زینون
  6. ریڈون۔ یہ تابکار گیس ہے جو ریڈیئم کے ٹوٹنے سے خارج ہوتی ہے۔ یہ انتہائی نایاب ہے۔
Noble gases
Hydrogen (diatomic nonmetal)
Helium (noble gas)
Lithium (alkali metal)
Beryllium (alkaline earth metal)
Boron (metalloid)
Carbon (polyatomic nonmetal)
Nitrogen (diatomic nonmetal)
Oxygen (diatomic nonmetal)
Fluorine (diatomic nonmetal)
Neon (noble gas)
Sodium (alkali metal)
Magnesium (alkaline earth metal)
Aluminium (post-transition metal)
Silicon (metalloid)
Phosphorus (polyatomic nonmetal)
Sulfur (polyatomic nonmetal)
Chlorine (diatomic nonmetal)
Argon (noble gas)
Potassium (alkali metal)
Calcium (alkaline earth metal)
Scandium (transition metal)
Titanium (transition metal)
Vanadium (transition metal)
Chromium (transition metal)
Manganese (transition metal)
Iron (transition metal)
Cobalt (transition metal)
Nickel (transition metal)
Copper (transition metal)
Zinc (transition metal)
Gallium (post-transition metal)
Germanium (metalloid)
Arsenic (metalloid)
Selenium (polyatomic nonmetal)
Bromine (diatomic nonmetal)
Krypton (noble gas)
Rubidium (alkali metal)
Strontium (alkaline earth metal)
Yttrium (transition metal)
Zirconium (transition metal)
Niobium (transition metal)
Molybdenum (transition metal)
Technetium (transition metal)
Ruthenium (transition metal)
Rhodium (transition metal)
Palladium (transition metal)
Silver (transition metal)
Cadmium (transition metal)
Indium (post-transition metal)
Tin (post-transition metal)
Antimony (metalloid)
Tellurium (metalloid)
Iodine (diatomic nonmetal)
Xenon (noble gas)
Caesium (alkali metal)
Barium (alkaline earth metal)
Lanthanum (lanthanide)
Cerium (lanthanide)
Praseodymium (lanthanide)
Neodymium (lanthanide)
Promethium (lanthanide)
Samarium (lanthanide)
Europium (lanthanide)
Gadolinium (lanthanide)
Terbium (lanthanide)
Dysprosium (lanthanide)
Holmium (lanthanide)
Erbium (lanthanide)
Thulium (lanthanide)
Ytterbium (lanthanide)
Lutetium (lanthanide)
Hafnium (transition metal)
Tantalum (transition metal)
Tungsten (transition metal)
Rhenium (transition metal)
Osmium (transition metal)
Iridium (transition metal)
Platinum (transition metal)
Gold (transition metal)
Mercury (transition metal)
Thallium (post-transition metal)
Lead (post-transition metal)
Bismuth (post-transition metal)
Polonium (post-transition metal)
Astatine (metalloid)
Radon (noble gas)
Francium (alkali metal)
Radium (alkaline earth metal)
Actinium (actinide)
Thorium (actinide)
Protactinium (actinide)
Uranium (actinide)
Neptunium (actinide)
Plutonium (actinide)
Americium (actinide)
Curium (actinide)
Berkelium (actinide)
Californium (actinide)
Einsteinium (actinide)
Fermium (actinide)
Mendelevium (actinide)
Nobelium (actinide)
Lawrencium (actinide)
Rutherfordium (transition metal)
Dubnium (transition metal)
Seaborgium (transition metal)
Bohrium (transition metal)
Hassium (transition metal)
Meitnerium (unknown chemical properties)
Darmstadtium (unknown chemical properties)
Roentgenium (unknown chemical properties)
Copernicium (transition metal)
Nihonium (unknown chemical properties)
Flerovium (unknown chemical properties)
Moscovium (unknown chemical properties)
Livermorium (unknown chemical properties)
Tennessine (unknown chemical properties)
Oganesson (unknown chemical properties)
halogens  alkali metals
IUPAC group number 18
Name by element helium group or
neon group
Trivial name Noble gases, aerogens
CAS group number
(US, pattern A-B-A)
VIIIA
old IUPAC number
(Europe, pattern A-B)
Group 0

↓ Period
1
Image: Helium discharge tube
Helium (He)
2
2
Image: Neon discharge tube
Neon (Ne)
10
3
Image: Argon discharge tube
Argon (Ar)
18
4
Image: Krypton discharge tube
Krypton (Kr)
36
5
Image: Xenon discharge tube
Xenon (Xe)
54
6 Radon (Rn)
86

Legend
primordial element
element by radioactive decay
Atomic number color: red=gas

ہیلیئم نیون اور آرگون کے پائیدار مرکبات اب تک نہیں بنائے جا سکے ہیں۔ کرپٹون، زینون اور ریڈون کے کچھ مرکبات پائیدار ہوتے ہیں۔[1]

نیون سائن کے لیمپ میں نیون یا دوسری کوئی نوبل گیس بھری ہوتی ہے۔
15000 واٹ کا زینون بلب جو سنیما گھر کے پروجیکٹر میں استعمال ہوتا ہے۔ اس کے اندر زینون گیس کا دباو ہوا کے دباو سے 30 گنا زیادہ ہوتا ہے۔

فہرست

تاریخترميم

1785 میں ہنری کیونڈش نے بتایا تھا کہ ہوا میں لگ بھگ ایک فیصد ایک ایسی گیس ہوتی ہے جو نائٹروجن سے بھی کم عاملیت رکھتی ہے۔ کوئی سو سال بعد 1894 میں اسکاٹ لینڈ کے ایک کیمیا دان سر ویلیم ریمزے اور ایک انگریز طبعیات دان لارڈ Rayleigh نے ملکر اس گیس کو ایک نیا عنصر ثابت کیا اور اس کا نام آرگون رکھا۔1898 میں انہوں نے مائع ہوا کی کسری کشید (fractional distillation) سے کرپٹون نیون اور زینون بھی الگ کر لی۔ ان دونوں سائینس دانوں کو 1904 میں نوبل انعام ملا۔
جب ہماری زمین پانچ ارب سال پہلے وجود میں آئی تھی تو یہاں ہائیڈوجن اور ہیلیئم کی بڑی مقدار موجود تھی۔ مگر زمین کی کشش ثقل اتنی زیادہ نہیں ہے کہ ہائیڈروجن اور ہیلیئم جیسے ہلکے ایٹموں کو اپنی گرفت میں رکھ سکے۔ (دیکھیے اسکیپ ولاسٹی) اس لیے کرہ ہوائی کی ساری ہائیڈروجن اور ہیلیئم کرہ ہوائی سے نکل کر کائینات کی فضا میں گم ہو گئیں۔
clevite نامی ایک کچ دھات کو جب گرم کیا جاتا ہے تواس میں سے ہیلیئم خارج ہوتی ہے۔ قدرتی گیس میں بھی ہیلیئم کی اچھی خاصی مقدار موجود ہوتی ہے۔۔ سورج کی روشنی کے طیف کا مشاہدہ کرکے 1868 میں سورج پر ہیلیئم کی موجودگی کی پیشنگوئی کر دی گئی تھی۔ زمین پر ہیلیئم اس کے 27 سال بعد 1895 میں دریافت ہوئی۔

خواصترميم

Property[2][3] ہیلیئم نیون آرگون کرپٹون زینون ریڈون
کثافت (g/dm3) 0.1786 0.9002 1.7818 3.708 5.851 9.97
نقطہ کھولاو (K) 4.4 27.3 87.4 121.5 166.6 211.5
نقطہ پگھلاو (K) 0.95
(at 25 bar)
24.7 83.6 115.8 161.7 202.2
حرارت تبخیر (kJ/mol) 0.08 1.74 6.52 9.05 12.65 18.1
پانی میں حل پذیری 20 °C (cm3/kg) 8.61 10.5 33.6 59.4 108.1 230
جوہری عدد 2 10 18 36 54 86
ایٹمی نصف قطر (calculated) (pm) 31 38 71 88 108 120
تائین توانائی (kJ/mol) 2372 2080 1520 1351 1170 1037
برقی منفیت[4] 4.16 4.79 3.24 2.97 2.58 2.60
For more data, see Noble gas (data page).

مزید دیکھیےترميم

حوالہ جاتترميم

  1. Britannica
  2. نقص حوالہ: ٹیگ <ref>‎ درست نہیں ہے؛ brit نامی حوالہ کے لیے کوئی مواد درج نہیں کیا گیا۔ (مزید معلومات کے لیے معاونت صفحہ دیکھیے)۔
  3. نقص حوالہ: ٹیگ <ref>‎ درست نہیں ہے؛ greenwood891 نامی حوالہ کے لیے کوئی مواد درج نہیں کیا گیا۔ (مزید معلومات کے لیے معاونت صفحہ دیکھیے)۔
  4. Allen, Leland C. (1989). "Electronegativity is the average one-electron energy of the valence-shell electrons in ground-state free atoms". Journal of the American Chemical Society 111 (25): 9003–9014. doi:10.1021/ja00207a003.