پوٹاشیئم

(Potassium سے رجوع مکرر)

پوٹاشیم یا پوٹاشیئم (انگریزی: potassium) ایک کیمیائی عنصر ہے جس کی علامت K اختیار کی جاتی ہے؛ اور K سے اختیار کی جانے والی اس علامت کی وجہ اس کی عربی اساس القلیۃ ہے جو اندلس کے راستے kalium کی شکل میں یورپ (لاطینی زبان) میں رائج ہوئی، اس لفظ کی اساس قلو ہے جس سے انگریزی کا موجودہ لفظ alkali (القالی) بھی ماخوذ کیا جاتا ہے۔ جبکہ اس عنصر کے عام نام potassium کی اساس potash سے آتی ہے جس کو اردو میں اُشنان کہا جاتا ہے اور اسی سے potash یعنی اشنان کے بعد ium یعنی یم لگا کر اشنانیم کا متبادل اختیار کیا جاتا ہے۔ یہ ایک نرم دھات ہے۔

پوٹاشیئم,  19K
Potassium-2.jpg
پیرافین تیل کے نیچے پوٹاشیئم موتی۔ بڑے موتی کی پیمائش 0.5 cm ہے۔
Potassium Spectrum.jpg
پوٹاشیئم کے طیفی لائنیں
General properties
Pronunciation/p[invalid input: 'ɵ']ˈtæsiəm/ po-TAS-ee-əm
Appearanceچاندائی خاخستری
پوٹاشیئم in the دوری جدول
Hydrogen (diatomic nonmetal)
Helium (noble gas)
Lithium (alkali metal)
Beryllium (alkaline earth metal)
Boron (metalloid)
Carbon (polyatomic nonmetal)
Nitrogen (diatomic nonmetal)
Oxygen (diatomic nonmetal)
Fluorine (diatomic nonmetal)
Neon (noble gas)
Sodium (alkali metal)
Magnesium (alkaline earth metal)
Aluminium (post-transition metal)
Silicon (metalloid)
Phosphorus (polyatomic nonmetal)
Sulfur (polyatomic nonmetal)
Chlorine (diatomic nonmetal)
Argon (noble gas)
Potassium (alkali metal)
Calcium (alkaline earth metal)
Scandium (transition metal)
Titanium (transition metal)
Vanadium (transition metal)
Chromium (transition metal)
Manganese (transition metal)
Iron (transition metal)
Cobalt (transition metal)
Nickel (transition metal)
Copper (transition metal)
Zinc (transition metal)
Gallium (post-transition metal)
Germanium (metalloid)
Arsenic (metalloid)
Selenium (polyatomic nonmetal)
Bromine (diatomic nonmetal)
Krypton (noble gas)
Rubidium (alkali metal)
Strontium (alkaline earth metal)
Yttrium (transition metal)
Zirconium (transition metal)
Niobium (transition metal)
Molybdenum (transition metal)
Technetium (transition metal)
Ruthenium (transition metal)
Rhodium (transition metal)
Palladium (transition metal)
Silver (transition metal)
Cadmium (transition metal)
Indium (post-transition metal)
Tin (post-transition metal)
Antimony (metalloid)
Tellurium (metalloid)
Iodine (diatomic nonmetal)
Xenon (noble gas)
Caesium (alkali metal)
Barium (alkaline earth metal)
Lanthanum (lanthanide)
Cerium (lanthanide)
Praseodymium (lanthanide)
Neodymium (lanthanide)
Promethium (lanthanide)
Samarium (lanthanide)
Europium (lanthanide)
Gadolinium (lanthanide)
Terbium (lanthanide)
Dysprosium (lanthanide)
Holmium (lanthanide)
Erbium (lanthanide)
Thulium (lanthanide)
Ytterbium (lanthanide)
Lutetium (lanthanide)
Hafnium (transition metal)
Tantalum (transition metal)
Tungsten (transition metal)
Rhenium (transition metal)
Osmium (transition metal)
Iridium (transition metal)
Platinum (transition metal)
Gold (transition metal)
Mercury (transition metal)
Thallium (post-transition metal)
Lead (post-transition metal)
Bismuth (post-transition metal)
Polonium (post-transition metal)
Astatine (metalloid)
Radon (noble gas)
Francium (alkali metal)
Radium (alkaline earth metal)
Actinium (actinide)
Thorium (actinide)
Protactinium (actinide)
Uranium (actinide)
Neptunium (actinide)
Plutonium (actinide)
Americium (actinide)
Curium (actinide)
Berkelium (actinide)
Californium (actinide)
Einsteinium (actinide)
Fermium (actinide)
Mendelevium (actinide)
Nobelium (actinide)
Lawrencium (actinide)
Rutherfordium (transition metal)
Dubnium (transition metal)
Seaborgium (transition metal)
Bohrium (transition metal)
Hassium (transition metal)
Meitnerium (unknown chemical properties)
Darmstadtium (unknown chemical properties)
Roentgenium (unknown chemical properties)
Copernicium (transition metal)
Nihonium (unknown chemical properties)
Flerovium (unknown chemical properties)
Moscovium (unknown chemical properties)
Livermorium (unknown chemical properties)
Tennessine (unknown chemical properties)
Oganesson (unknown chemical properties)
Na

K

Rb
لاعملینپوٹاشیئمجمصر
جوہری عدد (Z)19
Group, periodgroup 1 (alkali metals), period 4
Blocks-block
Standard atomic weight (Ar)39.0983(1)
برقی تشکیل[Ar] 4s1
Electrons per shell
2, 8, 8, 1
Physical properties
Phaseٹھوس
نقطۂ انجماد336.53 کیلون ​(63.38 °C, ​146.08 °F)
نقطہ کھولاؤ1032 K ​(759 °C, ​1398 °F)
کثافت near درجہ حرارت کمرہ0.862 g/cm3
when liquid, at m.p.0.828 g/cm3
نقطۂ ثلاثیہ336.35 K, ​ kPa
سخانۂ ائتلاف2.33 جول فی مول
Heat of 76.9 kJ/mol
Molar heat capacity29.6 J/(mol·K)
Atomic properties
تکسیدی عددs1 ​مضبوط اساس اکسید
برقی منفیتPauling scale: 0.82
تائین توانائی
(more)
جوہری رداسempirical: 227 پیکومیٹر
Covalent radius203±12 pm
وانڈروال رداس275 pm
Miscellanea
قلمی ساخت ​(bcc)
Body-centered cubic crystal structure for پوٹاشیئم
آواز کی رفتار thin rod2000 m/s (at 20 °C)
حرارتی پھیلاؤ83.3 µm/(m·K) (at 25 °C)
حر ایصالیت102.5 W/(m·K)
مزاحمیت72 n Ω·m (at 20 °C)
مقناطیسیتparamagnetic
Young's modulus3.53 GPa
Shear modulus1.3 GPa
Bulk modulus3.1 GPa
موس پیمانہ0.4
Brinell hardness0.363 MPa
کیمیائی شعبۂ اخلاص اندراجی عدد7440-09-7
Main isotopes of پوٹاشیئم
ہم جا Abun­dance ہاف لائف (t1/2) اشعاعی تنزل Pro­duct
39K 93.26% 20 تعدیلوں کیساتھ K مستحکم ہے
40K 0.012% 1.248(3)×109 y β 1.311 40Ca
ε 1.505 40Ar
β+ 1.505 40Ar
41K 6.73% 22 تعدیلوں کیساتھ K مستحکم ہے
| references | in Wikidata

تاریخ

یہ ایک نرم دھات ہے۔ جس کا تعلق دوری جدول کے القالی دھاتوں سے ہے۔ اس کو انگریز کیمیا دان ہمفری ڈیوی نے 1807ء میں دریافت کیا تھا۔

تیاری

جب اس کو پانی میں حل کیا جاتا ہے تو یہ پانی میں موجود تیزابساز سے مل کر کاسٹک پوٹاش میں تبدیل ہو جاتا ہے۔ اور پانی کی آبساز کو آزاد کر دیتا ہے۔

خصوصیات

طبیعی خصوصیات

پوٹاشیئم ایک نرم سرمئی دھات ہے۔ اسے چاقو سے آسانی سے کاٹا جا سکتا ہے۔ اس کا پگھلنے کا نقطہ 63 ڈگری سیلسیئس (145.4 ڈگری فارنہائٹ) ہے۔ یہ بہت کم درجہ حرارت پر پگھلتا ہے۔ یہ ایک القالی دھات ہے۔ یہ سنگصر (lithium) کے بعد دوسرے ہلکا القالی دھات ہے۔

کیمیائی خصوصیات

پوٹاشیئم صوداصر (sodium) اور دیگر القالی دھاتوں کی طرح بہت سے کیمیائی رد عمل میں رد عمل ظاہر کرتا ہے۔ یہ ہوا میں داغدار ہو کر سطح پر ایک سفید اکسید ساز پرت پیدا کرتا ہے۔ اس لیے اسے تیل میں ذخیرہ کیا جاتا ہے۔ یہ پانی کے ساتھ بھی بہت تیزی سے رد عمل ظاہر کرتا ہے، جو اس کے تیل میں ذخیرہ کرنے کی ایک اور وجہ ہے۔ پانی کے ساتھ اس کے رد عمل کے دوران پیدا ہونے والی آبساز (hydrogen) شعلوں میں پھٹ سکتی ہے جب پانی میں پوٹاشیئم کی ایک بڑی مقدار شامل کی جاتی ہے۔ پوٹاشیئم آبکسید (potassium hydroxide) بھی پیدا ہوتا ہے۔ پوٹاشیئم بھی آسانی سے ہوا میں جلتا ہے، پیرآکسائڈ یا سپرآکسائڈ بنانے کے لیے۔

خاص مرکبات

اس کے خاص خاص مرکبات یہ ہیں۔

واقعہ

پوٹاشیئم فطرت میں نہیں ہوتا ہے کیونکہ یہ بہت زیادہ رد عمل شدہ ہے۔ یہ معدنیات میں پایا جاتا ہے، اگرچہ۔ یہ ان سے پوٹاشیئم آبکسید (potassium hydroxide) یا پوٹاشیئم سبزداد (potassium chloride) کے برق پاشیدگی کے ذریعے نکالا جاتا ہے۔ پوٹاشیئم آبکسید اور پوٹاشیئم سبزداد کو بہت زیادہ درجہ حرارت پر پگھلانا پڑتا ہے۔

استعمال

پوٹاشیئم دھات محللات سے پانی جذب کرنے کے لیے استعمال ہوتا ہے۔ یہ کچھ علمی آلات (scientific instruments) میں بھی استعمال ہوتا ہے۔

پوٹاشیئم کے مرکبات صابن، کھاد، دھماکہ باز، اور ماچس میں استعمال ہوتے ہیں۔

غذائیت

مزید دیکھیے

حوالہ جات

بیرونی روابط