کعب بن لوی محمد صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کے آباء و اجداد میں سے تھے۔ ان کا شجرہ کچھ یوں ہے
کعب بن لوی بن غالب بن فھر بن مالک بن نضر بن کنانہ بن خزیمہ بن مدرکہ بن الیاس بن مضر بن نزار بن معد بن عدنان
(عربی میں : كعب بن لؤي بن غالب بن فهر بن مالك بن النضر بن كنانة بن خزيمة بن مدركة بن الياس بن مضر بن نزار بن معد بن عدنان )

محمد صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کا شجرہ ان تک یوں پہنچتا ہے
محمد بن عبد اللہ بن عبدالمطلب بن ہاشم بن عبد مناف بن قصی بن کلاب بن مرہ بن کعب
(عربی میں : محمد بن عبد اللہ بن عبد المطلب بن هاشم بن عبد مناف بن قصي بن كلاب بن مرة بن كعب بن لؤي )
ابن کثیر نے لکھا ہے کہ ایک دفعہ یوم العروبہ (جمعہ) کے دن کعب بن لوی نے قریش کو جمع کیا اور مختلف باتیں کر کے کہا کہ عنقریب میں تم کو ایک خوشخبری دوں گا جو ایک نبی کریم کے بارے میں ہوگی۔۔[1] اس سے ان لوگوں کے منہ بند ہو جاتے ہیں جو حضور صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کے آباء کے ایمان پر شک کرتے ہیں۔ یہ واقعہ بعثت سے پانچ سو ساٹھ سال پہلے کا ہے۔

کعب بن لوی
معلومات شخصیت
پیدائش سنہ 305 (عمر 1714–1715 سال)  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اولاد مرہ بن کعب  ویکی ڈیٹا پر (P40) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
والد لوی بن غالب  ویکی ڈیٹا پر (P22) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

جمعہ قائم کرنے کا حوالہترميم

ان کے حوالے سے لکھا جاتا ہے کہ سب سے پہلے انھوں نے یوم عروبہ کو قریش کے نوجوان کو جمع کرکے جمعہ نماز کا اہتمام کیا تھا. (غیر مصدقہ)

حوالہ جاتترميم

  1. البدایۃ والنہایۃ از ابن کثیر جلد دوم۔ اردو ترجمہ شائع کردہ از نفیس اکیڈمی کراچی