حسین ابن علی (شریف مکہ)

سید حسین ابن علی ہاشمی تھے۔ یہ اہل بیت سے ہونے کی وجہ سے 1908ء میں شریف مکہ بنے۔ پہلی جنگ عظیم میں جب انگریزوں کو ترکوں کے خلاف کو کوئی کامیابی حاصل نہیں ہو رہی تھی ایک انگریز جاسوس لارنس آف عریبیہ کے ساتھ مل کر خلافت عثمانیہ کے خلاف بغاوت کر دی جس کے نتیجے کے طور پر ترکوں کو شکست ہوئی۔

حسین ابن علی
Sherif-Hussein.jpg
شریف اور امیر مکہ
معیاد عہدہ1908–1924
پیشروعلی عبداللہ پاشا
جانشینعلی بن حسین
شاہ حجاز
فرماں روائی10 جون 1916 – 3 اکتوبر 1924
پیشروکوئی نہیں
جانشینعلی بن حسین
سلطان عرب[1]
فرماں روائی1916–1918
جانشینکوئی نہیں
نسلشاہ حجاز علی بن حسین
شہزادہ حسن
شاہ اردن عبداللہ اول بن حسین
شہزادی فاطمہ
شاہ عراق و شام فیصل بن حسین
شہزادی صالحہ
شہزادی سارہ
شہزادہ زید
مکمل نام
حسین بن علی الہاشمی
شاہی خاندانالہاشمی
والدشریف علی بن محمد
والدہشیخہ صالحہ بنت غارم[2]
پیدائش1854
قسطنطنیہ، سلطنت عثمانیہ
وفات4 جون 1931
عمان، امارت شرق اردن
تدفینشاہی مزار، اعظمیہ، عمان (شہر)، امارت شرق اردن موجودہ اردن
مذہباسلام[3]

اس کے ایک بیٹے امیر فیصل کو عراق کا بادشاہ بنا دیا گیا اور ایک کو اردن کا۔ 1924ء میں نجد کے فرمانروا ابن سعود سے شکست کھا کر تخت سے دست بردار ہوئے۔ 1924ء سے 1931ء تک قبرص میں جلاوطن رہنے کے بعد اردن کے درالحکومت عمان میں وفات پائی۔

بیرونی روابطترميم

حوالہ جاتترميم

  1. Marshall Cavendish Corporation. History of World War I, Volume 1۔ Marshall Cavendish Corporation, 2002. Pp. 255
  2. A یمنi widow of the Bani-Shahar tribe.
  3. "IRAQ – Resurgence In The Shiite World – Part 8 – Jordan & The Hashemite Factors". APS Diplomat Redrawing the Islamic Map. 2005. 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 29 اپریل 2015.