سید قطب کا اصل نام سید ہے جبکہ قطب ان کا خاندانی نام ہے۔ ان کے آباء واجداد اصلاً جزیرۃ العرب کے رہنے والے تھے۔ ان کے خاندان کے ایک بزرگ وہاں سے ہجرت کرکے بالائی مصر کے علاقے میں آباد ہو گئے تھے۔ سید قطب کی پیدائش 9 اکتوبر 1906ء میں مصر کے ضلع اسیوط کے موشا نامی گاؤں میں ہوئی۔ ابتدائی تعلیم گاؤں میں اور بقیہ تعلیم قاہرہ یونیورسٹی سے حاصل کی اوربعد میں یہیں پروفیسر ہو گئے۔ کچھ دنوں کے بعد وزارت تعلیم کے انسپکٹر آف اسکولز کے عہدے پر فائز ہوئے اور اس کے بعد ’’اخوان المسلمین‘‘سے وابستہ ہو گئے اور آخری دم تک اسی سے وابستہ رہے۔

سید قطب
Sayyid Qutb.jpg
سید قطب شہید ۱۹۶۶ میں جمال عبدالناصر کے دور آمریت میں عدالتی مقدمہ کے دوران
معروفیتسید قطب
پیدائش9 اکتوبر 1906(1906-10-09)
موشا، محافظہ اسیوط، خديويت مصر
وفات29 اگست 1966(1966-80-29) (عمر  59 سال)
قاہرہ، مصر
نسلمصری
عہداکیسویں صدی
مذہباسلام
مکتب فکراہل سنت
شعبۂ عملاسلام، سیاست، تفسیر قرآن (تفسیر قرآن)
اہم نظریاتزمانہ جاہلیت، عبودیت، الہہ، حاکمیت، دین کی سہی تعریف
کارہائے نماياںفی ظلال القرآن (In the Shade of Quran)، معالم فی الطریق (Milestones)
سید قطب

ادبی خدماتترميم

سید قطب شہید مصری معاشرے کے اندر ایک ادیب لبیب کی حیثیت سے ابھرے۔ سیاسی اور اجتماعی نقاد کے عنوان سے انہوں نے نام پیدا کیا۔ ان کی اہم ترین تصنیف قرآن کریم کی تفسیر ہے جو ’’فی ظلال القرآن‘‘کے نام سے عربی میں لکھی گئی ہے اور اس کا ترجمہ بشمول اردو کئی زبانوں میں ہوچکا ہے۔

گرفتاریترميم

جمال ناصر کے تاریک دور آمریت میں کئی بار آپ کو پابند سلاسل کیا گیا۔ اخوان المسلمین سے آپ کی وابستگی مصری حکومت کو بہت کھٹکتی تھی۔

ثابت قدمیترميم

جمال ناصر کے دور میں جب آپ کو گرفتار ہوئے تقریبا 10 سال ہوچلے تھے۔ مصری حکومت نے یہ پیشکش کی کہ آپ چند سطور لکھ دیں جن میں مصری حکومت سے معافی کی درخواست کی گئی ہو آپ نے فرمایا " مجھے تعجب ہوتا ہے ان لوگوں پر جو یہ کہتے ہیں کہ باطل سے معافی مانگ لے۔ اگر میری گرفتاری قدرت کی طرف سے ہے تو میں اسی میں خوش ہوں اور اگر میری گرفتاری باطل کی طرف سے ہے تو میں باطل سے رحم کی بھیک مانگنے کے لیے ہرگزتیار نہیں "۔ اس کے بعد آپ پر ظلم و ستم کا سلسلہ مزید تیز کر دیا گیا۔

شہادتترميم

بالآخر اسلام کے اس عظیم مفکر، داعی او ر مفسر قرآن کو ان کی شہرہ آفاق کتاب معالم فی الطريق لکھنے پر مصری حکومت کے خلاف سازشیں کرنے کے بے بنیاد الزام میں گرفتار کر لیا گیااور 25 اگست 1966ء کو پھانسی دے دی گئی۔

تصانیفترميم

  • طفل من القریۃ (گاؤں کا بچہ)
  • المدينۃ المسحورۃ (سحر ذدہ شہر )
  • النقد الادبی
  • التصوير الفنی فی القرآن
  • مشاھد القيامۃ فی القرآن
  • معالم فی الطريق
  • المستقبل لھذا الدين
  • ھذا الدین
  • فی ظلال القرآن (تفسیرِ قرآن)
  • كیف وقعت مراكش تحت الحماہۃ الفرنسیۃ؟
  • الصبح يتنفس
  • قیمۃ الفضیلۃ بين الفرد والجماعۃ
  • حدثینی
  • الدلالۃ النفسیۃ للالفاظ والتراكيب العربیۃ
  • ھل نحن متحضرون؟
  • ہم الحياۃ
  • وظیفۃ الفن والصحافۃ
  • العدالۃ الاجتماعیۃ فی السلام
  • شيلوك فلسطين او قضیۃ فلسطین
  • اين انت يا مصطفى كامل؟
  • ھتاف الروح
  • تسبیح
  • فلنعتمد على انفسنا
  • ضریبۃ الذل
  • این الطریق؟

متعلقہ مضامینترميم

  یہ ایک نامکمل مضمون ہے۔ آپ اس میں اضافہ کر کے ویکیپیڈیا کی مدد کر سکتے ہیں۔