زمین کا ایک بڑا علاقہ جو عام خیال سے سمُندر میں گھرا ہو، بَرِاَعْظّم کہلاتا ہے۔ اس تعریف کے مطابق سات بَِراَعْظّم ہیں۔ ایشیا، یورپ، افریقا، انٹارکٹیکا، آسٹریلیا، شمالی امریکا اور جنوبی امریکا۔ مگر یہ خیال کچھ درست نہیں جدید اصلاح کے مطابق یورپ اور ایشیا روس کے زمینی راستے سے جڑے ہوئے ہیں اور یوریشیا کہلاتے ہیں۔ اسی طرح جنوبی اور شمالی امریکا بھی جڑے ہوئے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ براعظموں کی اصل تعداد پانچ تصور کی جاتی ہے۔ اور اسی کے مطابق اولمپک تنظیم کا نشان بھی پانچ براعظموں کے لیے پانچ دائروں پر مشتمل ہے۔

سات براعظم
پانچ براعظموں کی نمائندگی کرنے والا اولمپک تنظیم کا نشان

رقبے اور آبادی دونوں لحاظ سے سب سے بڑا براعظم ایشیا ہے۔ مسلمانوں کی اکثریت ایشیا میں رہتی ہے۔ ساتوں براعظم مل کر زمین کا صرف ایک تہائی بنتے ہیں اور باقی حصہ سمندروں پر مشتمل ہے۔

براعظموں کی تعدادترميم

براعظموں کی تعداد کے شمار کے متعدد طریقے ہیں۔

نمونے
رنگ مختلف براعظموں کی نمائندگی کر رہے ہیں
4 براعظم[1]
          افریقہ یوریشیا
       بر اعظم امریکا
    انٹارکٹکا
    آسٹریلیا
5 براعظم
[2][3][4]
    افریقا
       یوریشیا
       بر اعظم امریکا
    انٹارکٹکا
    آسٹریلیا
6 براعظم[5]
    افریقا
    یورپ
    ایشیا
       بر اعظم امریکا
    انٹارکٹکا
    آسٹریلیا
6 براعظم
[2][6]
    افریقا
       یوریشیا
    شمالی امریکا
    جنوبی امریکا
    انٹارکٹکا
    آسٹریلیا
7 براعظم
[7][8][6][9][10][11]
    افریقا
    یورپ
    ایشیا
    شمالی امریکا
    جنوبی امریکا
    انٹارکٹکا
    آسٹریلیا

رقبہ اور آبادیترميم

مندرجہ ذیل جدول سات براعظم ماڈل کا استعمال کرتے ہوئے آبادی کا خلاصہ بلحاظ کمی رقبہ ہے۔

 
رقبہ کا موازنہ (دسیوں ملین مربع کلومیٹرمیں) اور آبادی (بلحاظ بلین افراد)
براعظم رقبہ (کلومیٹر²) رقبہ (میل²) کل زمینی رقبہ
کا فیصد
کل آبادی کل آبادی
کا فیصد
کثافت
افراد فی
کلومیٹر²
کثافت
افراد فی
میل²
سب سے زیادہ آبادی والا
شہر (صحیح)
ایشیا 43,820,000 4.717×1014 29.5% 4,164,252,000 60% 95.0 246 شنگھائی, چین
افریقا 30,370,000 3.269×1014 20.4% 1,022,234,000 15% 33.7 87 لاگوس, نائجیریا
شمالی امریکا 24,490,000 2.636×1014 16.5% 542,056,000 8% 22.1 57 میکسیکو شہر, میکسیکو
جنوبی امریکا 17,840,000 1.920×1014 12.0% 392,555,000 6% 22.0 57 ساؤ پالو, برازیل
انٹارکٹکا 13,720,000 1.477×1014 9.2% 4,490[12] 0% 0.0003 0.00078 میک مرڈو سٹیشن
یورپ 10,180,000 1.096×1014 6.8% 738,199,000 11% 72.5 188 ماسکو, روس[13]
آسٹریلیا 9,008,500 9.6967×1013 5.9% 29,127,000 0.4% 3.2 8.3 سڈنی, آسٹریلیا


حوالہ جاتترميم

  1. R. W. McColl، ویکی نویس (2005, Golson Books Ltd.). "'continents' - Encyclopedia of World Geography, Volume 1". صفحہ 215. ISBN 9780816072293. 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 26 جون 2012. And since Africa and Asia are connected at the Suez Peninsula, Europe, Africa, and Asia are sometimes combined as Afro-Eurasia or Eurafrasia. 
  2. ^ ا ب "Continent". The Columbia Encyclopedia. 2001. New York: Columbia University Press - Bartleby.
  3. Océano Uno, Diccionario Enciclopédico y Atlas Mundial, "Continente", page 392, 1730. ISBN 84-494-0188-7
  4. Los Cinco Continentes (The Five Continents), Planeta-De Agostini Editions, 1997. ISBN 84-395-6054-0
  5. ^ ا ب "Continent". دائرۃ المعارف بریطانیکا. 2006. Chicago: Encyclopædia Britannica, Inc.
  6. World, National Geographic - Xpeditions Atlas. 2006. Washington, DC: National Geographic Society.
  7. The World - Continents, Atlas of Canada
  8. اوکسفرڈ انگریزی لغت. 2001. New York: Oxford University Press.
  9. "Continent". MSN Encarta Online Encyclopedia 2006.. Archived 2009-10-31.
  10. "Continent". McArthur, Tom, ed. 1992. The Oxford Companion to the English Language. New York: Oxford University Press; p. 260.
  11. Non-permanent, varies. See also: Demographics of Antarctica. Antarctica. CIA World Factbook. March 2011 data. Retrieved December 24, 2011.
  12. "Forbes проигнорировал Москву". www.irn.ru. 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 10 اکتوبر 2013.