مرکزی مینیو کھولیں

جیفری لینگ لینڈز

سابق برطانوی میجر اور پاکستانی معلم
جیفری لینگ لینڈز
A Teacher "Mr. Langland.jpg 

معلومات شخصیت
پیدائش 21 اکتوبر 1917  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ پیدائش (P569) ویکی ڈیٹا پر
کنگسٹن اپون ہل  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
وفات 2 جنوری 2019 (102 سال)  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ وفات (P570) ویکی ڈیٹا پر
ایچی سن کالج،  لاہور  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام وفات (P20) ویکی ڈیٹا پر
شہریت Flag of England.svg انگلستان
Flag of Pakistan.svg پاکستان  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شہریت (P27) ویکی ڈیٹا پر
عملی زندگی
پیشہ فوجی افسر،  معلم  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر
عسکری خدمات
شاخ برطانوی فوج،  برطانوی ہندی فوج،  پاک فوج  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں عسکری شاخ (P241) ویکی ڈیٹا پر
عہدہ میجر  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں عسکری رتبہ (P410) ویکی ڈیٹا پر
لڑائیاں اور جنگیں دوسری جنگ عظیم  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں لڑائی (P607) ویکی ڈیٹا پر
اعزازات
Ord.Nishan-i-Pakistan.ribbon.gif نشان پاکستان
Lint Orde van het Britse Rijk.jpg آرڈر آف دی برٹش ایمپائر
United-kingdom408.gif آرڈر آف سینٹ مائیکل اور سینٹ جارج 
Hilal-i-Imtiaz Pakistan.svg ہلال امتیاز   خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں وصول کردہ اعزازات (P166) ویکی ڈیٹا پر

جیفری ڈگلس لینگ لینڈز (انگریزی: Geoffrey Douglas Langlands) (پیدائش:21 اکتوبر 1917ء— وفات: 2 جنوری 2019ء) برطانوی فوج میں میجر اور تقسیم ہند کے بعد پاکستان میں ایچیسن کالج سے وابستہ معلم تھے۔اُنہیں اُن کی خدمات کے صلے میں حکومت پاکستان نے نشان امتیاز اور ہلال امتیاز سے نوازا تھا۔

فہرست

ابتدائی حالاتترميم

جیفری لینگ لینڈز کی پیدائش 21 اکتوبر 1917ء کو انگلستان کے شہر کنگسٹن اپون ہل میں ہوئی۔[1] جیفری اور اُن کا بھائی جڑواں پیدا ہوئے تھے۔ جیفری کے والد اینگلو امریکن کمپنی میں ملازمت کرتے تھے جبکہ والدہ کلاسیکی رقص کی تعلیم دیا کرتی تھیں۔ 1918ء میں جیفری کے والد 1918ء کے ہسپانوی فلو نامی ایک وبائی مرض میں مبتلا ہو کر انتقال کر گئے۔[2]والد کے انتقال کے بعد اُن کی ماں اُن دونوں بھائیوں کو لے کر برسٹل منتقل ہوگئیں۔ 1927ء یا 1928ء کے آغاز میں جیفری کی والدہ مرض سرطان کا شکار ہوکر فوت ہوگئیں تو جیفری اور اُن کا بھائی اپنے نانا کی سرپرستی میں آ گئے۔ 24 دسمبر 1928ء کو جیفری کے نانا کا بھی انتقال ہوا تو اب دونوں بغیر کسی سرپرست کے رہ گئے۔[3] اَب خاندان کے ایک قریبی عزیز یعنی دوست کے خاندان کو اِن دونوں بھائیوں کی سرپرستی دی گئی اور جیفری کو کنگز کالج، ٹانٹن میں داخل کروا دیا گیا۔[4] جیفری کے بڑے بھائی نے برسٹل میں تعلیم کی اچھی کارکردگی پر ماہانہ وظیفہ حاصل کرلیا اور اُس خاندان نے اِن دونوں بھائیوں کو اچھی تربیت میں تعلیم دِلوائی۔[5][6][7]

بطور معلمترميم

18 سال کی عمر میں جولائی 1935ء میں جیفری نے اپنی تعلیم مکمل کی اور اے لیول کے بعد اُنہوں نے بطور معلم کے لندن میں پڑھانا شروع کیا۔ ستمبر 1936ء میں جیفری نے کروئیڈون میں ریاضی اور سائنس کے مضامین پڑھانے شروع کیے۔[8]

دوسری جنگ عظیم میں شرکتترميم

ستمبر 1939ء میں جب دوسری جنگ عظیم کی ابتداء ہوئی تو جیفری برطانوی فوج میں بطور فوجی بھرتی ہوئے[9] اور 1942ء میں بحیثیت کمانڈو جنگ میں خدمات سر انجام دیں۔جنوری 1944ء میں جیفری بطور کمانڈو کے برطانوی ہند میں آ گئے اور یہاں بنگلور میں قیام کے دوران ہنگامی طور پر 3 ستمبر 1944ء کو سیکنڈ لیفٹننٹ کے عہدے پر فائز ہوئے اور بنگلور کے بعد دہرہ دون میں مقیم رہے۔[10]

تقسیم ہند کے بعد پاکستان آمد اور بطور معلم خدماتترميم

تقسیم ہند 1947ء کے بعد جیفری نے پاکستان آنے کا فیصلہ کرلیا اور وہ پاکستان چلے آئے اور راولپنڈی میں پاک فوج سے منسلک ہوگئے۔[11][12] جیفری لینگ لینڈز نے تقریباً 60 سال پاکستان میں بطور معلم کے خدمات سر انجام دیں۔ علاوہ اَزیں وہ پاک فوج سے بھی منسلک رہے۔ جب برطانوی فوج نے پاکستان سے کیے گئے معاہدے کے تحت ملک چھوڑا تو صدر پاکستان محمد ایوب خان کی فرمائش پر جیفری پاکستان ٹھہر گئے اور یہیں لاہور میں ایچیسن کالج میں بطور معلم کے ریاضی اور سائنس کے مضامین پڑھاتے رہے۔ اس شعبے سے وہ 25 سال منسلک رہے۔اپریل 1979ء میں صوبہ سرحد کے وزیراعلیٰ کی فرمائش پر شمالی وزیرستان میں کیڈٹ کالج رزمک میں بطور معلم کے پڑھاتے رہے۔ یہ عرصہ معلمی اپریل 1979ء سے ستمبر 1989ء پر محیط رہا۔

وفاتترميم

جیفری 101 سال کی عمر میں بروز بدھ 2 جنوری 2019ء کو لاہور میں مختصر علالت کے بعد انتقال کرگئے۔[13][14]

مزید دیکھیےترميم

حوالہ جاتترميم

  1. "Campaigner of education: Major Geoffrey of the Hindu Kush retires from school"۔ Aaj News۔ مورخہ 6 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔
  2. "Campaigner of education: Major Geoffrey of the Hindu Kush retires from school"۔ Aaj News۔ مورخہ 6 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔
  3. https://www.aaj.tv/2013/03/campaigner-of-education-major-geoffrey-of-the-hindu-kush-retires-from-school/
  4. "Campaigner of education: Major Geoffrey of the Hindu Kush retires from school"۔ Aaj News۔ مورخہ 6 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔
  5. Aroosa Shaukat۔ "Major Langlands: The blue-eyed boy"۔ دی ایکسپریس ٹریبیون۔ Pakistan۔ مورخہ 6 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2014۔
  6. Saira Agha۔ "Third World Solidarity to honour Major Langlands, hold press conference"۔ Daily Times۔ Pakistan۔ مورخہ 9 دسمبر 2014 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2014۔
  7. Sonali Raha۔ "Bound by duty"۔ گلف نیوز۔ دبئی۔ مورخہ 6 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2014۔
  8. Sonali Raha۔ "Bound by duty"۔ گلف نیوز۔ دبئی۔ مورخہ 6 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2014۔
  9. Aroosa Shaukat۔ "Major Langlands: The blue-eyed boy"۔ دی ایکسپریس ٹریبیون۔ Pakistan۔ مورخہ 6 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2014۔
  10. The London Gazette: no. 36821. p. . 1 December 1944.
  11. Neil Tweedie۔ "Goodbye to Major Geoffrey Langlands of the Hindu Kush"۔ The Telegraph۔ مورخہ 6 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2014۔
  12. Rob Crilly۔ "Former major, 93, honoured for 60 years teaching in tribal Pakistan"۔ The Telegraph۔ مورخہ 6 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2014۔
  13. https://www.dawn.com/news/1455053
  14. https://www.dawn.com/news/1455154/maj-geoffrey-langlands-passes-away