آغاز خانۂ معلومات -->

ڈھاکہ
Dhaka skyline1.jpg
 

تاریخ تاسیس 1608  ویکی ڈیٹا پر (P571) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
Dhaka locator map.svg
 
نقشہ

انتظامی تقسیم
ملک Flag of Bangladesh.svg بنگلہ دیش (26 مارچ 1971–)[1]
Flag of Pakistan.svg پاکستان (12 مارچ 1956–26 مارچ 1971)
Flag of Pakistan.svg مملکت پاکستان (14 اگست 1947–12 مارچ 1956)
British Raj Red Ensign.svg برطانوی ہند (28 جون 1858–14 اگست 1947)
Flag of the British East India Company (1801).svg کمپنی راج (1793–28 جون 1858)  ویکی ڈیٹا پر (P17) کی خاصیت میں تبدیلی کریں[2][3]
دارالحکومت برائے
تقسیم اعلیٰ ڈھاکہ ڈویژن  ویکی ڈیٹا پر (P131) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
جغرافیائی خصوصیات
متناسقات 23°42′00″N 90°22′30″E / 23.70000°N 90.37500°E / 23.70000; 90.37500
رقبہ 368 مربع کلومیٹر[4]  ویکی ڈیٹا پر (P2046) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
بلندی 60 میٹر  ویکی ڈیٹا پر (P2044) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
آبادی
کل آبادی 16800000 (2017)[4]  ویکی ڈیٹا پر (P1082) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مزید معلومات
جڑواں شہر
اوقات متناسق عالمی وقت+06:00  ویکی ڈیٹا پر (P421) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
سرکاری زبان بنگلہ  ویکی ڈیٹا پر (P37) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
رمزِ ڈاک
1000
1100
1200–1299
1300–1399  ویکی ڈیٹا پر (P281) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
فون کوڈ 02  ویکی ڈیٹا پر (P473) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
قابل ذکر
باضابطہ ویب سائٹ باضابطہ ویب سائٹ  ویکی ڈیٹا پر (P856) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
جیو رمز 1185241  ویکی ڈیٹا پر (P1566) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
  ویکی ڈیٹا پر (P935) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

Shahid Sriti Stombho (Proposed).jpg

ڈھاکہ ملک بنگلہ دیش کا دار الحکومت ہے۔ دریائے برہم پتر کے معاون دریا بوڑھی گنگا کے کنارے واقع اس شہر کی آبادی 90 لاکھ سے زيادہ ہے جس کی بدولت یہ بنگلہ دیش کا سب سے بڑا اور دنیا کے گنجان آباد ترین شہروں میں سے ایک ہے۔

یہ شہر پٹ سن کی بہت بڑی منڈی اور صنعت و تجارت کا مرکز ہے۔ یہاں کی ململ دنیا بھر میں مشہور تھی لیکن برطانوی عہد حکومت میں اس عظیم شہر کی صنعت کو برباد کر دیا گیا۔ ڈھاکہ اپنی خوبصورت مساجد کی وجہ سے بھی شہرت رکھتا ہے۔

مغل دور حکومت میں یہ شہر جہانگیر نگر کے نام سے جانا جاتا تھا۔ برطانوی راج میں یہ کلکتہ کے بعد ریاست بنگال کا دوسرا بڑا شہر بن گیا۔

1921ء میں یہاں ڈھاکا یونیورسٹی قائم ہوئی۔

تقسیم ہند کے بعد یہ مشرقی پاکستان کا انتظامی دار الحکومت قرار پایا جبکہ 1971ء میں سقوط پاکستان کے بعد 1972ء میں اسے نو آموز مملکت بنگلہ دیش کا دار الحکومت قرار دیا گیا۔

شہر وسطی بنگلہ دیش میں دریائے بوڑھی گنگا کے مشرقی کناروں پر واقع ہے۔ شہر کا کل رقبہ 815.85 مربع کلومیٹر ہے اور یہ سات اہم تھانوں دھان منڈی، کوٹ والی، موتی جھیل، رمنا، محمد پور، سترا پور، تیج گاؤں اور 14 ثانوی تھانوں گلشن، لال باغ، میر پور، پلابی، سبوج باغ، ڈھاکا کنٹونمنٹ، ڈمرا، ہزاری باغ، شیام پور، بڈا، کفرل، کامرانگیر چار، کھل گاؤں اور اتارا پر مشتمل ہے۔ شہر میں کل 130 وارڈ اور 725 محلے ہیں۔ ضلع ڈھاکا کا کل رقبہ 1463.60 مربع کلومیٹر ہے اور جس کے گرد غازی پور، تن گیل، منشی گنج، راجبری، نارائن گنج اور مانک گنج کے اضلاع واقع ہے۔

مزید دیکھیےترميم

  1. archINFORM location ID: https://www.archinform.net/ort/63.htm — اخذ شدہ بتاریخ: 6 اگست 2018
  2.    "صفحہ ڈھاکہ في GeoNames ID". GeoNames ID. اخذ شدہ بتاریخ 24 نومبر 2020ء. 
  3.     "صفحہ ڈھاکہ في ميوزك برينز.". MusicBrainz area ID. اخذ شدہ بتاریخ 24 نومبر 2020ء. 
  4. ^ ا ب عنوان : Guinness World Records 2019 — صفحہ: 163 — ناشر: Guinness World Records Limited — ISBN 978-1-912286-46-1
  5. http://timesofindia.indiatimes.com/city/kolkata/A-tale-of-two-cities-Will-Kolkata-learn-from-her-sister/articleshow/25916888.cms