مغول کے لیے اس عنوان پر دبائیں!

مغل اردو زبان میں جنوبی ایشیا کے ایک قبیلہ یا ذات کا نام ہے، (فارسی و عربی : مغول اور انگریزی:Mughal or Mogul)؛ بھارت، پاکستان، افغانستان اور بنگلہ دیش سے متعلق ان لوگوں کی ایک بڑی تعداد موجود ہے جو مغلوں نے مختلف ادوار میں وسط ایشیا سے حملوں کے دوران آباد کیے- دیگر قومیں جیسا کہ ترک اور ایرانی تارکین وطن بھی یہاں آباد ہوئے۔

مختصر تاریخ اور نژادترميم

تمام وہ لوگ جو مغل نسب کا دعویٰ کرتے ہیں، مختلف وسطی ایشیائی ترکی-مغول فوجوں کی اولادیں ہیں- چنگیز خان سے تیمور اور تیمور سے ظہیر الدین محمد بابر تک ایران اور جنوبی ایشیا پر حملے کے نتیجے میں یہ لوگ یہاں مقیم پزیر ہوئے-

لیکن مغل کی اصطلاح ایک وسیع معنی ہو گیا ہے- Bernier، ایک فرانسیسی مسافر جو مغل شہنشاہ اورنگزیب کے دور حکومت کے دوران ہندوستان کا دورہ کیا تھا کے مطابق

" قرون وسطی کے زمانے میں آل مغول نے مختلف فوجوں کے تحت جنوبی ایشیا فتح کیا تھا- مغل اصطلاح ایران، قزل باشی، ترکی اور تارکین وطن کے لیے بھی استعمال کیا جاتا تھا-"

17th صدی میں مغل لفظ مختلف گروہوں کی ایک بڑی تعداد کا احاطہ کرتا ہے- عام طور پر، بھارت کے تمام مرکزی ایشیائی تارکین وطن، ازبک، چغتائی، تاجک، قپچاق، برلاس‎، قازق، ترکمن، کرغزستان، اویغور یا افغانوں اور قفقاز کے تارکین وطن کے لیے بھی استعمال کیا جاتا تھا

تقسیمترميم

ممالکترميم

یہوشو پراجیکٹ کے مطابق مغل قوم کی تعداد مختلف ممالک میں مندرجہ ذیل ہے؛

بھارتی ریاستوں میںترميم

پاکستانی صوبوں میںترميم

معروف مغل شخصیاتترميم

  • ((چنگیز خان))
  • ((جوجی خان))بھای اکتای خان,چغتای خان,تولی خان
  • ((باتوخان جوجی خان کا سب بڑا بیتا اور چنگیز خان کا پوتا تھا 1235 میں اس فوج کاسیپہ سالار مقرر ھوا کا مقصد یورپ کو فتح کرنا تھا۔دریاے والگا کو عبور کرنے کے بعد اس فوج کا ایک حصہ بلغاریہ کی طرف روانہ کیااور باقی فوج نے روس پر حملہ کر دیا 1240 میں ماسکو اور خیف اور دو سال بعد ہنگری اور پولینڈ پر قبضہ کر لیا.اور پھر جرمنی پر حملہ کر دیا۔ 1242 میں خاقان اعظم کے انتخاب میں حصہ لینے کے لیے واپس آے دوسری مہحم کی تیاری میں مصروف تھے کہ انتقال ہو گیا۔اس کی فوج کے لوگ چانکہ زوق برق مرصیع خیموں میں رہتے تھے اس لیے ان کو اردوے زرین (Golden Horde کہا جاتا ہے
  • بھای اردو خان,برکہ خان,شیبان خان,محمد خان,توکا تیمور,
  • توقان/Toqoqan منگول سلطنت گولڈن بارڈ باتو خان کا بیتا اور چنگیز خان کا پوتا تھا۔یہ حکمران خاندان سے تھا لیکن اس نے خو حکومت نہیں کی اس کے بعد سارے خان اس کی اولاد میں سے تھے.
  • (( منگو تیمور))
  • (( توغریلچہ))
  • (( سلطان محمداوزبیک خان))
  • (( جانی بیگ,تنیی بیگ,
  • سن آف جانی محمد/جانی بیگ
  • ((باقی محمد))
  • ((ولی محمد خان))
  • (( دین محمد))
  • آل سراج الدین مغل۔حاجی محمد عمر مغل۔محمد بابر مغل۔محمد عبد اللہ بن عمر مغل۔محمد طیب بن عمر مغل۔محمد ایان بن بابر مغل

سن آف دین محمد

  • (( امام قلی خان))
  • سن آن امام قلی خان
  • ((نور قلی خان))
  • (( صیفاء خان))
      *((ماناں خان))
  • (( علم دین)) * ((غلام دین))
  • (( سخی محمدمغل)) * (( فقیر محمد))
  • (( سید محمدمغل)) * ((نذر محمد مغل))
  • ((گلاب محمد مغل))
  • (( محمد حسین مغل))
  • (( عبدال حسین مغل))
  • (( بگاہ خان مغل))
  • ((محمد خان مغل ))
  • ((محمد خالد آذاد مغل))
  • ((محمد احمد خان مغل))
  • (( رہمنگوں خان))
  • (( نیکاء خان))
  • ((کرم دین,نواب خان, میربخش))
  • (( نور محمد مغل, حسن علی خان مغل))
  • (( منگتا خان, غریب خان))
  • ((بہادر علی خان مغل))
  • حاجی شریف مغل,حاجی خادم حسین مغل,شیر محمد مغل
  • ((شاہ محمد مغل))
  • ((محمد یعقوب مغل ))
  • ((نثار مغل))
  • ((ذیان مغل ))

إِنَّا لِلّهِ وَإِنَّـا إِلَيْهِ رَاجِعونَ اللہ تعالیٰ مغفرت فرمائے اور جنت الفردوس میں اعلیٰ مقام عطا فرما


۔))
  بحوالہ:  تاریخ مغلیہ از مرزا الیاس 
      : چنگیز خان از علیم اللہ
      :رشتوں کی پہچان از مولوی محمد 
       نصیر گریبان نامہ از عشمان انجم
 بحوالہ. تاریخ مغلیہ کشمیر از سردار بشیر احمد صدیقی مرحوم  


متعلقہ مضامینترميم

حوالہ جاتترميم