محمد بن عبد اللہ کی تاریخیت

مقالات بسلسلۂ
محمد
محمد
Muhammad2.png
باب محمد


اگرچہ اسلامی پیغمبر محمد بن عبد اللہ کا وجود ہم عصر یا قریبی ہم عصر تاریخی ریکارڈ سے قائم ہے، [1][2] محمد بن عبد اللہ سے متعلق کئی تاریخی واقعات کی تاریخیت اور غیر تاریخی پن کے عناصر کے درمیان میں فرق کرنے کی کوششیں زیادہ کامیاب نہیں ہوئیں۔ لہذا، محمد بن عبد اللہ کی تاریخیت، ان کی ذات کو چھوڑ کر، زیر بحث رہتی ہے، محمد بن عبد اللہ سے متعلقہ تاریخ کتنی معتبر ہے اس کے بارے میں اختلاف ہے، مسلم ذرائع کے مطابق "انھوں نے جو کچھ بھی کیا اور کہا وہ سارا قلم بند (ریکارڈ) کیا گیا"، [3] جب کہ بعض علمی ذرائع کا دعویٰ ہے کہ محمد بن عبد اللہ کی زندگی کے بارے میں تقریباً تمام دستیاب معلومات، ان کے وجود کی حقیقت کے سوا، تاریخی اعتبار سے قابل اعتبار نہیں۔[4]

محمد بن عبد اللہ کی زندگی کے بارے میں معلومات کا ابتدائی مسلم ذریعہ قرآن ہے جو، بہت کم ذاتی معلومات دیتا ہے اور اس کی تاریخیت پر بحث ہوتی ہے۔[5][6] سیرہ (پیغمبر کا سوانحی ریکارڈ) نبی کے فرمان، اعمال، افعال، سکوت و تقریر (دوسروں کے اعمال دیکھنے یا مطلع ہونے پر دیا گیا ردععل (حمایت یا مخالفت میں، یا خاموشی اختیار کرنا)) ان سب کو حدیث اور سنت کہا جاتا ہے، ان کا بڑا حصہ، تیسری و چوتھی صدی ہجری کے مسلم مصنفین کے ہاں قلم بند ہوا، [7][8] اور یہ ذخیرہ محمد بن عبد اللہ کی زندگی اور پیغام کے بارے میں بہت زیادہ معلومات مہیا کرتا ہے، لیکن کچھ علمی حلقوں میں ان معلومات کے قابل اعتبار ہونے پر علمی سطح پر بحث ہوتی ہے۔ اس کے علاوہ نسبتا کم تعداد میں ہم عصر یا قریب ہم عصر غیر مسلم ذرائع موجود ہیں جو محمد بن عبد اللہ کے وجود کی تصدیق کرتے ہیں اور اپنے آپ میں اور مسلم ذرائع سے موازنہ کے لیے قابل قدر ہیں۔[6]

مزید دیکھیےترميم

ملاحظاتترميم

مآخذترميم

  1. W. Wright, Catalogue Of Syriac Manuscripts In The British Museum Acquired Since The Year 1838, 1872, Part III, Printed by order of the Trustees: London, No. DCCCCXIII, pp. 1040–1041
  2. A. Palmer (with contributions from S. P. Brock and R. G. Hoyland)، The Seventh Century In The West-Syrian Chronicles Including Two Seventh-Century Syriac Apocalyptic Texts, 1993, op. cit.، pp. 5-6; R. G. Hoyland, Seeing Islam As Others Saw It: A Survey And Evaluation Of Christian, Jewish And Zoroastrian Writings On Early Islam, 1997, op. cit.، pp. 118-119
  3. دائرۃ المعارف الاسلامیہ، Muhammad
  4. ^ ا ب Nigosian 2004, p. 6.
  5. Donner 1998, p. 125.
  6. ولیم منٹگمری واٹ، محمد مکہ میں (کتاب)، 1953, Oxford University Press, p.xi

حوالہ جاتترميم

  • Donner، Fred McGraw (مئی 1998). Narratives of Islamic Origins: The Beginnings of Islamic Historical Writing. Darwin Press, Incorporated. ISBN 0-87850-127-4. 
  • Berg، Herbert؛ Sarah Rollens (2008). "The Historical Muhammad and the Historical Jesus: A Comparison of Scholarly Reinventions and Reinterpretations". Studies in Religion/Sciences Religieuses. 37 (2): 271–292. doi:10.1177/000842980803700205. 
  • Cook، Michael (2000). The Koran : A Very Short Introduction. Oxford University Press. ISBN 0-19-285344-9. 
  • Crone، Patricia؛ Cook، Michael (1977). Hagarism: The Making of the Islamic World. Cambridge University Press. ISBN 0-521-29754-0. 
  • Fouracre، Paul (2006). The New Cambridge Medieval History. Cambridge University Press. ISBN 0-521-36291-1. 
  • Hoyland، Robert G (1998). Seeing Islam as Others Saw It: A Survey and Evaluation of Christian, Jewish and Zoroastrian Writings on Early Islam. Darwin. ISBN 0-87850-125-8. 
  • Ibn Warraq، ویکی نویس (2000). "2. Origins of Islam: A Critical Look at the Sources". The Quest for the Historical Muhammad. Prometheus. صفحات 89–124. 
  • Lewis، Bernard (1967). The Arabs in history. Harper & Row. ISBN 978-0-06-131029-4. 
  • Lammens، Henri (2000). "4. The Koran and Tradition". In Ibn Warraq. The Quest for the Historical Muhammad. Prometheus. صفحات 169–187. 
  • Lammens، Henri (2000). "5. The Age of Muhammad and the Chronology of the Sira". In Ibn Warraq. The Quest for the Historical Muhammad. Prometheus. صفحات 188–217. 
  • Nevo، Yehuda D.؛ Koren، Judith (2000). "Methodological Approaches to Islamic Studies". The Quest for the Historical Muhammad. New York: Prometheus Books. صفحات 420–443. 
  • Nigosian، Solomon Alexander (2004). Islam: Its History, Teaching, and Practices. Indiana University Press. ISBN 0-253-21627-3. 
  • Peters، F. E. (1991). "The Quest for Historical Muhammad". International Journal of Middle East Studies. doi:10.1017/S0020743800056312. 
  • Hoyland، Robert G. (2015). In God's Path: the Arab Conquests and the Creation of an Islamic Empire. Oxford University Press. 
  • Waines، David (1995). Introduction to Islam. Cambridge University Press. ISBN 0-521-42929-3. 
  • Nevo، Yehuda D.؛ Koren، Judith (2000). "Methodological Approaches to Islamic Studies". The Quest for the Historical Muhammad. New York: Prometheus Books. صفحات 420–443.