بھارتی قوم

نسلی گروہ
(بھارتی شہری سے رجوع مکرر)

بھارتی وہ لوگ ہیں جو بھارت کی قومیت یا شہریت رکھتے ہیں، جو دنیا کا سب سے زیادہ آبادی والا ملک ہے اور اس میں پورے عالم کی 17.50% آبادی بستی ہے۔[25] بھارتی سے مراد قومیت ہے اور کوئی نسلی یا لسانی گروہ نہیں ہے۔ بھارتی قومیت کئی علاقائی نسلی و لسانی زمروں پر مشتمل ہے، جو بھارت کی تکثیری اور پیچیدہ تاریخ دکھاتی ہے۔ بھارت بر صغیر کے سبھی اہم نسل کے لوگوں کا احاطہ کرتا ہے۔ بھارتی آبا و اجداد کے ساتھ بھارتی تارکین وطن، جو دوسرے ملک میں جا کر بسے ہیں، وہ لوگ قریب قریب ایشیا اور شمالی امریکا کے اہم ملکوں میں قابل لحاظ حد تک جا کر آباد ہوئے ہیں۔[4]

Indians
کل آبادی
تقریباً 1.21 بلین[1][2]
2011ء بھارت میں مردم شماری
ت 1.34 بلین[3]
2017 کی تخمیہ
ت 30.8 ملین[4]
بھارتی تارکین وطن
گنجان آبادی والے علاقے
 بھارت
 سعودی عرب4,100,000[5][6]
 نیپال4,000,000[7]
 متحدہ عرب امارات3,500,000[8]
 ریاستہائے متحدہ3,456,477[9]
 ملائیشیا2,012,600[10]
 پاکستان2,000,000[8][11][12][13]
 مملکت متحدہ1,451,862[14]
 کینیڈا1,374,710[15]
 جنوبی افریقا1,274,867[16]
 میانمار1,030,000[17]
 موریشس994,500[4]
 سری لنکا839,504[18]
 سلطنت عمان796,001[4]
 کویت700,000[19]
 قطر650,000[20]
 ٹرینیڈاڈ و ٹوباگو556,800[4]
 آسٹریلیا468,800[21]
 تھائی لینڈ465,000[4]
 بحرین400,000[4]
 گیانا327,000[4]
 فجی315,000[4]
 فرانس (رے یونیوں، گواڈیلوپ، مارٹینیک، مایوٹ)456,470[4]
 سنگاپور250,300[22]
 اطالیہ197,301[4]
 جرمنی161,000[23]
 نیدرلینڈز156,000[4]
 نیوزی لینڈ155,178[24]
 سرینام148,000[4]
 انڈونیشیا120,000[4]
مذہب
غالب اکثرت:
ہندو مت
مذہبی اقلیتیں:
متعلقہ نسلی گروہ
بھارتی تارکین وطن

ہمہ نسل کی مثال: افریقی نسل کے لوگوں کی موجودگی ترمیم

بھارت میں افریقا کے لوگ دور قدیم سے آتے رہے ہیں ۔ لیکن کم لوگوں کو یہ پتہ ہے کہ افریقہ کے ہزاروں باشندے صدیوں سے یہاں کی ریاست گجرات میں باضابطہ ایک طبقے کے طور پر آباد ہیں ۔ بعض مورخین کا خیال ہے کہ پرتگالی انھیں غلام کے طور پر یہاں لائے تھے۔ [26]

انسانی ترقیاتی اشاریہ ترمیم

انسانی ترقیاتی اشاریہ ایک ایسی پیمائش ہے جس سے کہ انسان کی ترقی کے تین زاویوں کو ناپا جاتا ہے: لمبی اور صحت مند زندگی، معلومات تک رسائی اور باوقار معیار زندگی کا حصول۔ ان پیمانوں کی کڑی جانچ سے پتہ چلا ہے کہ دنیا کے تین سب سے اعلیٰ مقام پر فائز ممالک ناروے (انسانی ترقی کے اشاریے کی قدر 0.949)، آسٹریلیا (0.939) اور سویٹزرلینڈ (0.939) ہیں۔ بھارت 2016ء میں اس پیمائش میں سابقہ سال کی 130 ویں جگہ سے گر کر 131 پر آ گیا تھا۔ بھارت میں انسانی ترقی کا اشاریہ 0.624 ہے۔ اس سے یہ ”اوسط انسانی ترقی” کے زمرے میں آتا ہے۔ یہ وہ مقام ہے جس میں بھارت وہی جگہ جا چکا ہے جہاں پر کانگو، نامیبیا اور پاکستان ہیں۔ جنوبی ایشیا کے ممالک میں بھی بھارت کا مقام سری لنکا (73) اور مالدیپ (105) کے بعد آتا ہے۔ یہ دونوں ممالک “اعلیٰ انسانی ترقی“ کے زمرے میں آتے ہیں۔[27]

حوالہ جات ترمیم

  1. "Population Enumeration Data (Final Population)"۔ بھارت میں مردم شماری۔ 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 17 جون 2016 
  2. "A – 2 DECADAL VARIATION IN POPULATION SINCE 1901" (PDF)۔ بھارت میں مردم شماری۔ اخذ شدہ بتاریخ 17 جون 2016 
  3. "Total Population – Both Sexes"۔ World Population Prospects, the 2017 Revision۔ United Nations Department of Economic and Social Affairs، Population Division, Population Estimates and Projections Section۔ جون 2017۔ 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 22 جون 2017 
  4. ^ ا ب پ ت ٹ ث ج چ ح خ د ڈ ذ ر​ "Population of Overseas Indians" (PDF)۔ وزارت خارجی امور، حکومت ہند۔ 31 دسمبر 2016۔ 25 دسمبر 2018 میں اصل (PDF) سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 28 مئی 2016 
  5. "How Saudi Arabia's 'Family Tax' Is Forcing Indians To Return Home"۔ The Huffington Post۔ 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 21 جون 2017 
  6. "Indians brace for Saudi 'family tax'"۔ Times of India۔ 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 21 جون 2017 
  7. Where big can be bothersome آرکائیو شدہ (Date missing) بذریعہ hinduonnet.com (Error: unknown archive URL)۔ دی ہندو۔ 7 جنوری 2001.
  8. ^ ا ب "India is a top source and destination for world's migrants"۔ Pew Research Center۔ 3 مارچ 2017۔ 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 7 مارچ 2017 
  9. "ASIAN ALONE OR IN ANY COMBINATION BY SELECTED GROUPS: 2016"۔ U.S. Census Bureau۔ 18 جولا‎ئی 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 15 اکتوبر 2016 
  10. "Population by States and Ethnic Group"۔ Department of Information, Ministry of Communications and Multimedia, Malaysia۔ 2015۔ 12 فروری 2016 میں اصل سے آرکائیو شدہ 
  11. Neha Thirani Bagri۔ "There are more Indian migrants living in Pakistan than the United States"۔ Quartz۔ 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 7 مارچ 2017 
  12. "More Indian migrants in Pakistan than in US: Pew report – Times of India"۔ The Times of India۔ 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 7 مارچ 2017 
  13. "More Indian migrants living in Pakistan than US: PEW Research Centre – The Express Tribune"۔ The Express Tribune۔ 7 مارچ 2017۔ 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 7 مارچ 2017 
  14. "2011 Census: Ethnic group, local authorities in the United Kingdom"۔ Office for National Statistics۔ 11 اکتوبر 2013۔ اخذ شدہ بتاریخ 28 فروری 2015 
  15. "Immigration and Ethnocultural Diversity Highlight Tables"۔ statcan.gc.ca۔ 2016-06-10۔ 06 جنوری 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 02 مئی 2016 
  16. "Statistical Release P0302: Mid-year population estimates, 2011" (PDF)۔ Statistics South Africa۔ 27 جولائی 2011۔ صفحہ: 3۔ 25 دسمبر 2018 میں اصل (PDF) سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 01 اگست 2011 
  17. The Indian Community in Myanmar۔ 12 جون 2010 میں اصل سے آرکائیو شدہ 
  18. "Sri Lanka Census of Population and Housing, 2011 – Population by Ethnicity" (PDF)۔ Department of Census and Statistics, Sri Lanka۔ 20 اپریل 2012۔ 25 دسمبر 2018 میں اصل (PDF) سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 26 مئی 2018 
  19. "Kuwait MP seeks five-year cap on expat workers' stay"۔ Gulf News۔ 30 جنوری 2014۔ 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 26 مئی 2018 
  20. "Population of Qatar by nationality – 2017 report"۔ 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 7 فروری 2017 
  21. "Overseas born Aussies highest in over a century"۔ Australian Bureau of Statistics۔ Australian Bureau of Statistics۔ اخذ شدہ بتاریخ 31 مارچ 2016  [مردہ ربط]
  22. "Population in Brief 2015" (PDF)۔ Singapore Government۔ ستمبر 2015۔ 16 فروری 2016 میں اصل (PDF) سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 14 فروری 2016 
  23. Immigration from outside Europe almost doubled آرکائیو شدہ (Date missing) بذریعہ bib-demografie.de (Error: unknown archive URL)۔ Federal Institute for Population Research. Retrieved 1 مارچ 2017
  24. "[Stats NZ"۔ stats.govt.nz۔ اخذ شدہ بتاریخ 11 دسمبر 2017  [مردہ ربط]
  25. Official population clock، 24 نومبر 2015 میں اصل سے آرکائیو شدہ، اخذ شدہ بتاریخ 26 مئی 2018 
  26. انڈیا میں آباد افریقی قبائل - BBC News اردو
  27. India slips in human development index – The Hindu