پارلیمانی نظام (Parliamentary system) یا پارلیمانی جمہوریت (Parliamentary democracy) جمہوری حکومت کا ایک نظام ہے جس میں مجلس عاملہ کے وزراء پارلیمنٹ اور مقننہ کو جوابدہ ہوتے ہیں۔

مختلف سرکاری نظاموں کا نقشہ
  پارلیمانی نظام
  پارلیمانی جمہوریہ

پارلیمانی نظام ایک ایسا نظام حکومت ہے جس میں ایک کابینہ بالواسطہ یا بلا واسطہ ایک پارلیمنٹ کے تحت کام کرتی ہے۔ اس نظام میں اختیارات عموما وزیر اعظم کے پاس ہوتے ہیں۔ اس نظام میں صدر تو ہوتا ہے مگر صدر کے اختیاراتت بہت کم ہیں اور وزیر اعظم کے سب سے زیادہ اختیارات ہوتے ہیں۔ اس وقت وزیر اعظم عمران خان ہیں

  صدارتی جمہوریات مکمل صدارتی نظام کے ساتھ
  نیم صدارتی نظام کے ساتھ ممالک
  پارلیمانی جمہوریہ جہاں پارلیمنٹ سے منتخب ایگزیکٹو صدارت
  رسمی صدر کے ساتھ پارلیمانی جمہوریہ، جہاں وزیر اعظم کے ایگزیکٹو ہے
  آئینی بادشاہتیں جہاں بادشاہ کے اختیارت ایک وزیر اعظم کے مشورے تک تحت ہوتے ہیں
  آئینی بادشاہت، جہاں ایک علیحدہ سربراہ حکومت ہوتا ہے لیکن بادشاہ کو بھی سیاسی اختیارات حاصل ہیں

پارلیمانی نظام والے ممالکترميم

یک ایوانی پارلیمنٹترميم

ملک پارلیمنٹ
  البانیا Kuvendi
  بنگلادیش Jatiyo Sangshad
  بلغاریہ قومی اسمبلی
  بوٹسوانا پارلیمنٹ
  برکینا فاسو قومی اسمبلی
  کرویئشا پارلیمنٹ
  ڈنمارک Folketing
  ڈومینیکا ہاؤس آف اسمبلی
  استونیا Riigikogu
  فن لینڈ Eduskunta/Riksdag
  یونان پارلیمنٹ
  مجارستان قومی اسمبلی
  آئس لینڈ Althing
  اسرائیل Knesset
  کوسووہ Kuvendi
  کویت قومی اسمبلی
  لٹویا Saeima
  لبنان نائبین اسمبلی
  لیبیا جنرل نیشنل کانگریس
  لتھووینیا Seimas
  لکسمبرگ نائبین کا چیمبر
  جمہوریہ مقدونیہ Sobranie
  مالٹا ایوان نمائندگان
  موریشس قومی اسمبلی
  مالدووا پارلیمنٹ
  منگولیا State Great Khural
  مونٹینیگرو پارلیمنٹ
  نیپال آئین ساز اسمبلی
  نیوزی لینڈ پارلیمنٹ
  ناروے Stortinget
  پاپوا نیو گنی قومی پارلیمان
  پرتگال جمہوریہ کی اسمبلی
  سینٹ کیٹز و ناویس قومی اسمبلی
  سینٹ وینسینٹ و گریناڈائنز ہاؤس آف اسمبلی
  سامووا Fono
  سربیا قومی اسمبلی
  سنگاپور پارلیمنٹ
  سلوواکیہ قومی کونسل
  سری لنکا پارلیمنٹ
  سویڈن Riksdagen
  ترکی گرینڈ نیشنل اسمبلی
  یوکرین Verkhovna Rada
  وانواٹو پارلیمنٹ
  کرغیزستان Jogorku Kenesh

دو ایوانیترميم

تنظیم یا ملک پارلیمنٹ ایوان بالا ایوان زیریں
  آسٹریلیا پارلیمنٹ سینیٹ ایوان نمائندگان
  آسٹریا پارلیمنٹ وفاقی کونسل قومی کونسل
  اینٹیگوا و باربوڈا پارلیمنٹ سینیٹ ایوان نمائندگان
  بہاماس پارلیمنٹ سینیٹ ہاؤس آف اسمبلی
  بارباڈوس پارلیمنٹ سینیٹ ہاؤس آف اسمبلی
  بیلاروس قومی اسمبلی جمہوریہ کی کونسل ایوان نمائندگان
  بیلیز قومی اسمبلی سینیٹ ایوان نمائندگان
  بلجئیم وفاقی پارلیمنٹ سینیٹ نمائندگان کا چیمبر
  بھوٹان پارلیمنٹ قومی کونسل قومی اسمبلی
  کمبوڈیا پارلیمنٹ سینیٹ قومی اسمبلی
  کینیڈا پارلیمنٹ سینیٹ ہاؤس آف کامنس
  چیک جمہوریہ پارلیمنٹ سینیٹ نائبین کا چیمبر
  ایتھوپیا وفاقی پارلیمنٹ فیڈریشن ہاؤس عوام کے نمائندے ہاؤس
  یورپی اتحاد یورپی اتحاد مقننیہ یورپی اتحاد کونسل یورپی پارلیمنٹ
  جرمنی وفاقی مقننہ Bundesrat (وفاقی کونسل) Bundestag (وفاقی دائت)
  گریناڈا پارلیمنٹ سینیٹ ایوان نمائندگان
  بھارت پارلیمنٹ راجیہ سبھا لوک سبھا
  جمہوریہ آئرلینڈ اراکتس ایوان بالا آئرلینڈ ایوان زیریں آئرلینڈ
  عراق پارلیمنٹ کونسل کونسل نمائندگان
  اطالیہ پارلیمنٹ سینیٹ نائبین کا چیمبر
  جمیکا پارلیمنٹ سینیٹ ایوان نمائندگان
  جاپان دائت کونسل ایوان نمائندگان
  ملائیشیا پارلیمنٹ دیوان نگارا (سینیٹ) دیوان رعیت (ایوان نمائندگان)
  نیدرلینڈز ریاستیں جنرل Eerste Kamer (سینیٹ) Tweede Kamer (ایوان نمائندگان)
  پاکستان پارلیمنٹ سینیٹ سیکرٹریٹ قومی اسمبلی سیکرٹریٹ
  پولینڈ پارلیمنٹ سینیٹ Sejm
  سینٹ لوسیا پارلیمنٹ سینیٹ ہاؤس آف اسمبلی
  سلووینیا پارلیمنٹ قومی کونسل ()[1] قومی اسمبلی
  جنوبی افریقا پارلیمنٹ قومی کونسل قومی اسمبلی
  ہسپانیہ پارلیمنٹ سینیٹ کانگریس آف ڈپٹیز
  تھائی لینڈ قومی اسمبلی سینیٹ ایوان نمائندگان
  ٹرینیڈاڈ و ٹوباگو پارلیمنٹ سینیٹ ایوان نمائندگان
  مملکت متحدہ پارلیمنٹ ہاؤس آف لارڈز ہاؤس آف کامنس

حوالہ جاتترميم

  1. Lakota، Igor (2006). Sistem nepopolne dvodomnosti v slovenskem parlamentu (diplomska naloga) [The system of incomplete bicameralism in the سلووینیاn پارلیمنٹ (diploma thesis)] (PDF) (بزبان Slovene). Faculty of Social Sciences, University of Ljubljana. صفحہ 59. 26 دسمبر 2018 میں اصل (PDF) سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 16 دسمبر 2010.