انڈین پریمیئرلیگ مقابلوں میں پانچ وکٹوں کی فہرست

کرکٹ میں، پانچ وکٹوں کا حصول (جسے "پانچ کے لیے" یا "فائفر" بھی کہا جاتا ہے) [1] ایک ہی اننگز میں پانچ یا اس سے زیادہ وکٹیں لینے والا بولر ہے جسے ایک قابل ذکر کارنامہ سمجھا جاتا ہے، خاص طور پر ٹوئنٹی20 کرکٹ میں جہاں ایک گیند باز زیادہ سے زیادہ صرف 24 گیندیں (4 اوورز ) کر سکتا ہے۔ [2] [3] انڈین پریمیئر لیگ (آئی پی ایل) بھارت میں ایک پیشہ ور ٹوئنٹی 20 کرکٹ لیگ ہے، [4] جو 2008ء میں اپنے پہلے سیزن سے ہر سال منعقد ہوتی رہی ہے کھیلے گئے 16 سیزن میں مختلف گیند بازوں نے 32 مرتبہ پانچ وکٹیں حاصل کیں جن میں سے صرف دو پانچ وکٹیں بھارت سے باہر لی گئیں۔ [5] تیرہ میں سے 12 ٹیموں کے کھلاڑیوں نے پانچ وکٹیں حاصل کیں۔ کوچی ٹسکرز کیرالہ واحد فرنچائز ہے جس کے لیے کسی کھلاڑی نے پانچ وکٹ نہیں لیے۔ [5]

جیمز فالکنر ایک ہی سیزن میں ایک سے زیادہ پانچ وکٹ لینے والے اور ایک ہی سیزن میں ایک سے زیادہ پانچ وکٹیں لینے والے صرف 3 بولرز میں سے ایک ہیں۔ [6]

اس فہرست کے پہلے حصے میں تاریخی ترتیب میں آئی پی ایل میں لیے گئے تمام پانچ وکٹیں کے واقعات شامل ہیں جبکہ فہرست کا دوسرا حصہ آئی پی ایل سیزن کے ذریعے 5 وکٹوں کے نقصانات کا جائزہ فراہم کرتا ہے اور تیسرا حصہ آئی پی ایل ٹیموں کے ذریعے5 وکٹوں کے نقصانات کا جائزہ فراہم کرتا ہے۔ اس فہرست میں آئی پی ایل ٹیموں کے دوسرے ٹورنامنٹس میں کھیلے گئے کھیلوں کا احاطہ نہیں کیا گیا ہے۔

چابی

ترمیم
علامت مطلب
باؤلر مین آف دی میچ
تاریخ جس دن میچ منعقد ہوا تھا۔
اننگز اننگز جس میں پانچ وکٹیں حاصل کی گئیں۔
اوور گیندوں کی تعداد
رنز رنز کی تعداد تسلیم کی گئی۔
وکٹ لی گئی وکٹوں کی تعداد
اکانومی ریٹ کرکٹ کے اعدادوشمار#بولنگ کے اعدادوشمار
بلے باز بلے باز جن کی وکٹیں لی گئیں۔
نتیجہ بولر کی ٹیم کے لیے نتیجہ

پانچ وکٹیں حاصل کرنے والوں کی فہرست

ترمیم
انڈین پریمیئر لیگ میں پانچ وکٹیں[lower-greek 1]
نمبر. گیند باز تاریخ گراؤنڈ ٹیم مخالف ٹیم اننگ اوورز رنز وکٹیں اعداد و شمار بلے باز نتیجہ
1 تنویر, سہیلسہیل تنویر 4 مئی 2008 سوائی مان سنگھ اسٹیڈیم, جے پور راجستھان رائلز چنائی سپر کنگز 1 4 14 6 3.50 فاتح[7]
2 بالاجی, لکشمی پتیلکشمی پتی بالاجی 10 مئی 2008 ایم اے چدمبرم اسٹیڈیم, چنائی چنائی سپر کنگز کنگز الیون پنجاب 2 4 24 5 6.00 فاتح[8]
3 مشرا, امیتامیت مشرا 15 مئی 2008 فیروز شاہ کوٹلہ, دہلی دہلی ڈیئر ڈیولز دکن چارجرز 2 4 17 5 4.25 فاتح[9]
4 کمبلے, انیلانیل کمبلے 18 اپریل 2009 نیولینڈز کرکٹ گراؤنڈ, کیپ ٹاؤن رائل چیلنجرز بنگلور راجستھان رائلز 2 3.1 5 5 1.57 فاتح[10]
5 ملنگا, لاستھلاستھ ملنگا 10 اپریل 2011 فیروز شاہ کوٹلہ, دہلی ممبئی انڈینز دہلی ڈیئر ڈیولز 1 3.4 13 5 3.54 فاتح[11]
6 سنگھ, ہربھجنہربھجن سنگھ 22 اپریل 2011 وانکھیڈے اسٹیڈیم, ممبئی ممبئی انڈینز چنائی سپر کنگز 2 4 18 5 4.50 فاتح[12]
7 شرما, ایشانتایشانت شرما 27 اپریل 2011 جواہر لال نہرو اسٹیڈیم (کوچی) دکن چارجرز کوچی ٹسکرز کیرالہ 2 3 12 5 4.00 فاتح[13]
8 پٹیل, منافمناف پٹیل 10 مئی 2011 پنجاب کرکٹ ایسوسی ایشن سٹیڈیم, موہالی ممبئی انڈینز کنگز الیون پنجاب 1 4 21 5 5.25 ہارا[14]
9 جدیجا, رویندررویندر جدیجا 7 اپریل 2012 اے سی اے-وی ڈی سی اے اسٹیڈیم, وشاکھاپٹنم چنائی سپر کنگز دکن چارجرز 1 4 16 5 4.00 فاتح[15]
10 ماسکرینہاس, دیمتریدیمتری ماسکرینہاس 12 اپریل 2012 پنجاب کرکٹ ایسوسی ایشن سٹیڈیم, موہالی کنگز الیون پنجاب پونے واریئرز انڈیا 1 4 25 5 6.25 فاتح[16]
11 نارائن, سنیلسنیل نارائن 15 اپریل 2012 ایڈن گارڈنز, کولکاتا کولکتہ نائٹ رائیڈرز کنگز الیون پنجاب 1 4 19 5 4.75 ہارا[17]
12 فالکنر, جیمزجیمز فالکنر † (1/2) 27 اپریل 2013 سوائی مان سنگھ اسٹیڈیم, جے پور راجستھان رائلز سن رائزرز حیدرآباد 1 4 20 5 5.00 فاتح[18]
13 انادکت, جے دیوجے دیو انادکت † (1/2) 10 مئی 2013 فیروز شاہ کوٹلہ, دہلی رائل چیلنجرز بنگلور دہلی ڈیئر ڈیولز 2 4 25 5 6.25 فاتح[19]
14 فالکنر, جیمزجیمز فالکنر (2/2) 17 مئی 2013 راجیو گاندھی بین الاقوامی کرکٹ اسٹیڈیم, حیدرآباد راجستھان رائلز سن رائزرز حیدرآباد 1 4 16 5 4.00 ہارا[20]
15 زامپا, ایڈمایڈم زامپا 10 مئی 2016 اے سی اے-وی ڈی سی اے اسٹیڈیم, وشاکھاپٹنم رائزنگ پونے سپر جائنٹ سن رائزرز حیدرآباد 1 4 19 6 4.75 ہارا
16 ٹائی, اینڈریواینڈریو ٹائی 14 اپریل 2017 سوراشٹر کرکٹ ایسوسی ایشن اسٹیڈیم, راجکوٹ گجرات لائنز رائزنگ پونے سپر جائنٹ 1 4 17 5 4.25 فاتح[21]
17 کمار, بھونیشوربھونیشور کمار† (1/2) 17 اپریل 2017 راجیو گاندھی بین الاقوامی کرکٹ اسٹیڈیم, حیدرآباد سن رائزرز حیدرآباد کنگز الیون پنجاب 2 4 19 5 4.75 فاتح[22]
18 انادکت, جے دیوجے دیو انادکت (2/2) 6 مئی 2017 راجیو گاندھی بین الاقوامی کرکٹ اسٹیڈیم, حیدرآباد رائزنگ پونے سپر جائنٹ سن رائزرز حیدرآباد 1 4 30 5 7.5 فاتح
19 راجپوت, انکتانکت راجپوت 26 اپریل 2018 راجیو گاندھی بین الاقوامی کرکٹ اسٹیڈیم, حیدرآباد کنگز الیون پنجاب سن رائزرز حیدرآباد 1 4 14 5 3.50 ہارا
20 جوزف, الزاریالزاری جوزف 6 اپریل 2019 راجیو گاندھی بین الاقوامی کرکٹ اسٹیڈیم, حیدرآباد ممبئی انڈینز سن رائزرز حیدرآباد 2 3.4 12 6 3.27 فاتح
21 چکرورتی, ورونورون چکرورتی 24 اکتوبر 2020 شیخ زاید کرکٹ اسٹیڈیم, ابوظہبی کولکتہ نائٹ رائیڈرز دہلی کیپیٹلز 2 4 20 5 5.00 فاتح
22 پٹیل, ہرشلہرشل پٹیل 9 اپریل 2021 ایم اے چدمبرم اسٹیڈیم, چنائی رائل چیلنجرز بنگلور ممبئی انڈینز 1 4 27 5 6.75 فاتح
23 رسل, آندرےآندرے رسل 13 اپریل 2021 ایم اے چدمبرم اسٹیڈیم, چنائی کولکتہ نائٹ رائیڈرز ممبئی انڈینز 1 2 15 5 7.50 ہارا
24 سنگھ, ارشدیپارشدیپ سنگھ 21 ستمبر 2021 دبئی بین الاقوامی کرکٹ اسٹیڈیم, دبئی پنجاب کنگز راجستھان رائلز 1 4 32 5 8.00 ہارا
25 چاہل, یوزویندرایوزویندرا چاہل 18 اپریل 2022 بریبورن اسٹیڈیم, ممبئی راجستھان رائلز کولکتہ نائٹ رائیڈرز 2 4 40 5 10.00 فاتح
26 ملک, عمرانعمران ملک 27 اپریل 2022 وانکھیڈے اسٹیڈیم, ممبئی سن رائزرز حیدرآباد گجرات ٹائٹنز 2 4 25 5 6.25 ہارا
27 ہسرنگا, ونیندوونیندو ہسرنگا 8 مئی 2022 وانکھیڈے اسٹیڈیم, ممبئی رائل چیلنجرز بنگلور سن رائزرز حیدرآباد 2 4 18 5 4.50 فاتح
28 بمراہ, جسپریتجسپریت بمراہ 9 مئی 2022 ڈی وائی پاٹیل اسٹیڈیم, ممبئی ممبئی انڈینز کولکتہ نائٹ رائیڈرز 1 4 10 5 2.50 ہارا
29 مارک ووڈ

1 اپریل 2023 بی آر ایس اے بی وی ایکانہ کرکٹ اسٹیڈیم, لکھنؤ لکھنؤ سپر جائنٹس گجرات ٹائٹنز 2 4 14 5 3.50 فاتح
30 کمار, بھونیشوربھونیشور کمار

† (2/2)

15 مئی 2023 نریندرا مودی اسٹیڈیم, احمد آباد سن رائزرز حیدرآباد گجرات ٹائٹنز 1 4 30 5 7.50 ہارا
31 مدھوال, آکاشآکاش مدھوال

24 مئی 2023 ایم اے چدمبرم اسٹیڈیم, چنائی ممبئی انڈینز لکھنؤ سپر جائنٹس 2 3.3 5 5 1.43 فاتح
32

شرما, موہتموہت شرما

26 مئی 2023 نریندرا مودی اسٹیڈیم, احمد آباد گجرات ٹائٹنز ممبئی انڈینز 2 2.2 10 5 4.3 فاتح
33

ٹھاکر, یشیش ٹھاکر

7 اپریل 2024 ایکانا کرکٹ اسٹیڈیم، لکھنؤ لکھنؤ سپر جائنٹس گجرات ٹائٹنز 2 3.5 30 5 7.8 فاتح
34

بمراہ, جسپریتجسپریت بمراہ† (2/2)

11 اپریل 2024 وانکھیڈے اسٹیڈیم، ممبئی ممبئی انڈینز رائل چیلنجرز بنگلور 1 4 21 5 5.20 فاتح
35

شرما, سندیپسندیپ شرما

22 اپریل 2024 سوائی مان سنگھ اسٹیڈیم, جے پور راجستھان رائلز ممبئی انڈینز 1 4 18 5 4.50 فاتح

سیزن کا جائزہ

ترمیم

2022-2011ء اور 2023ء میں 4 کے ساتھ سب سے زیادہ 5 وکٹیں حاصل کیں۔ 2010ء، 2014ء اور 2015ء میں کوئی 5 وکٹیں نہیں لی گئیں۔

5 وکٹوں کے لیے سیزن کے حساب سے اعدادوشمار
سال پانچ وکٹوں کی تعداد بہترین باؤلنگ اعدادوشمار گیند باز ٹیم
2008ء 3 6/14 سہیل تنویر راجستھان رائلز
2009ء 1 5/5 انیل کمبلے رائل چیلنجرز بنگلور
2010ء 0 4/13 ڈج بولنجر چنائی سپر کنگز
2011ء 4 5/12 ایشانت شرما دکن چارجرز
2012ء 3 5/16 رویندر جدیجا چنائی سپر کنگز
2013ء 3 5/16 جیمز فالکنر راجستھان رائلز
2014ء 0 4/12 رویندر جدیجا چنائی سپر کنگز
2015ء 0 4/10 آشیش نہرا چنائی سپر کنگز
2016ء 1 6/19 ایڈم زمپا رائزنگ پونے سپر جائنٹ
2017ء 3 5/17 اینڈریو ٹائی گجرات لائنز
2018ء 1 5/14 انکت راجپوت کنگز الیون پنجاب
2019ء 1 6/12 الزاری جوزف ممبئی انڈینز
2020ء 1 5/20 ورون چکرورتی کولکتہ نائٹ رائیڈرز
2021ء 3 5/15 آندرے رسل کولکتہ نائٹ رائیڈرز
2022ء 4 5/10 جسپریت بمراہ ممبئی انڈینز
2023ء 4 5/5 آکاش مدھوال ممبئی انڈینز
2024ء 3 5/18 سندیپ شرما راجستھان رائلز

ٹیم کا جائزہ

ترمیم
پانچ وکٹوں کے لیے ٹیم وار اعدادوشمار
ٹیم پانچ وکٹوں کی تعداد بہترین باؤلنگ اعدادوشمار گیند باز حوالہ
چنائی سپر کنگز 2 5/16 رویندر جدیجا [23]
دکن چارجرز 1 5/12 ایشانت شرما [24]
دہلی کیپیٹلز 1 5/17 امیت مشرا [25]
گجرات لائنز 1 5/17 اینڈریو ٹائی [26]
کوچی ٹسکرز کیرالہ 0 4/13 بریڈ ہوج [27]
کولکتہ نائٹ رائیڈرز 3 5/15 آندرے رسل [28]
ممبئی انڈینز 6 6/12 الزاری جوزف [29]
پونے واریئرز انڈیا 0 4/18 اشوک ڈینڈا [30]
پنجاب کنگز 3 5/14 انکت راجپوت [31]
راجستھان رائلز 4 6/14 سہیل تنویر [32]
رائزنگ پونے سپر جائنٹ 2 6/19 ایڈم زمپا [33]
رائل چیلنجرز بنگلور 4 5/5 انیل کمبلے [34]
سن رائزرز حیدرآباد 3 5/19 بھونیشور کمار [35]
لکھنؤ سپر جائنٹس 1 5/14 مارک ووڈ [36]
گجرات ٹائٹنز 1 5/10 موہت شرما [37]

Last updated: 31 May 2023

حوالہ جات

ترمیم
  1. Greg Buckle (30 April 2007)۔ "Pigeon's almost perfect sendoff"۔ The Canberra Times۔ 15 اگست 2008 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 30 اگست 2012 
  2. M. A. Pervez (2001)۔ A Dictionary of Cricket۔ Orient Blackswan۔ صفحہ: 31۔ ISBN 978-81-7370-184-9 
  3. "Yahoo Cricket"۔ cricket.yahoo.net۔ اخذ شدہ بتاریخ 01 دسمبر 2020 
  4. "ICC Members – India"۔ International Cricket Council۔ 07 نومبر 2012 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 30 ستمبر 2012 
  5. ^ ا ب "Indian Premier League Cricket Team Records & Stats | ESPNcricinfo.com"۔ Cricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 01 دسمبر 2020 
  6. "IPL: Five bowlers with the most five-wicket hauls"۔ CricTracker (بزبان انگریزی)۔ 2018-02-17۔ اخذ شدہ بتاریخ 30 نومبر 2020 
  7. name="cskvskxip">"31st match: Chennai Super Kings v Kings XI Punjab at Chennai, May 10, 2008"۔ ESPNcricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 30 ستمبر 2012 
  8. "37th match: Delhi Daredevils v Deccan Chargers at Delhi, May 15, 2008"۔ ESPNcricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 30 ستمبر 2012 
  9. "2nd match: Royal Challengers Bangalore v Rajasthan Royals at Cape Town, Apr 18, 2009"۔ ESPNcricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 30 ستمبر 2012 
  10. "4th match: Delhi Daredevils v Mumbai Indians at Delhi, Apr 10, 2011"۔ ESPNcricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 30 ستمبر 2012 
  11. "25th match: Mumbai Indians v Chennai Super Kings at Mumbai, Apr 22, 2011"۔ ESPNcricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 30 ستمبر 2012 
  12. "32nd match: Kochi Tuskers Kerala v Deccan Chargers at Kochi, Apr 27, 2011"۔ ESPNcricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 30 ستمبر 2012 
  13. "54th match: Kings XI Punjab v Mumbai Indians at Mohali, May 10, 2011"۔ ESPNcricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 30 ستمبر 2012 
  14. "6th match: Deccan Chargers v Chennai Super Kings at Visakhapatnam, Apr 7, 2012"۔ ESPNcricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 30 ستمبر 2012 
  15. "14th match: Kings XI Punjab v Pune Warriors at Mohali, Apr 12, 2012"۔ ESPNcricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 30 ستمبر 2012 
  16. "17th match: Kolkata Knight Riders v Kings XI Punjab at Kolkata, Apr 15, 2012"۔ ESPNcricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 30 ستمبر 2012 
  17. "36th match: Rajasthan Royals v Sunrisers Hyderabad at Jaipur, Apr 27, 2013"۔ ESPNcricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 30 اپریل 2013 
  18. "57th match: Delhi Daredevils v Royal Challengers Bangalore at Delhi, May 10, 2013"۔ ESPNcricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 10 مئی 2013 
  19. "68th match: Sunrisers Hyderabad v Rajasthan Royals at Hyderabad (Deccan), May 17, 2013"۔ ESPNcricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 17 مئی 2013 
  20. "13th match: Gujarat Lions v Rising Pune Supergiants at Rajkot, Apr 13, 2017"۔ ESPNcricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 21 اپریل 2017 
  21. "19th match: Sunrisers Hyderabad v Kings XI Punjab at Hyderabad (Deccan), Apr 17, 2017"۔ ESPNcricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 21 اپریل 2017 
  22. "Chennai Super Kings Cricket Team Records & Stats | ESPNcricinfo.com"۔ Cricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 04 دسمبر 2020 
  23. "Deccan Chargers Cricket Team Records & Stats | ESPNcricinfo.com"۔ Cricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 04 دسمبر 2020 
  24. "Delhi Capitals Cricket Team Records & Stats | ESPNcricinfo.com"۔ Cricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 04 دسمبر 2020 
  25. "Gujarat Lions Cricket Team Records & Stats | ESPNcricinfo.com"۔ Cricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 04 دسمبر 2020 
  26. "Kochi Tuskers Kerala Cricket Team Records & Stats | ESPNcricinfo.com"۔ Cricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 04 دسمبر 2020 
  27. "Kolkata Knight Riders Cricket Team Records & Stats | ESPNcricinfo.com"۔ Cricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 04 دسمبر 2020 
  28. "Mumbai Indians Cricket Team Records & Stats | ESPNcricinfo.com"۔ Cricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 04 دسمبر 2020 
  29. "Pune Warriors Cricket Team Records & Stats | ESPNcricinfo.com"۔ Cricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 04 دسمبر 2020 
  30. "Kings XI Punjab Cricket Team Records & Stats | ESPNcricinfo.com"۔ Cricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 04 دسمبر 2020 
  31. "Rajasthan Royals Cricket Team Records & Stats | ESPNcricinfo.com"۔ Cricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 04 دسمبر 2020 
  32. "Rising Pune Supergiant Cricket Team Records & Stats | ESPNcricinfo.com"۔ Cricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 04 دسمبر 2020 
  33. "Royal Challengers Bangalore Cricket Team Records & Stats | ESPNcricinfo.com"۔ Cricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 04 دسمبر 2020 
  34. "Sunrisers Hyderabad Cricket Team Records & Stats | ESPNcricinfo.com"۔ Cricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 04 دسمبر 2020 
  35. "Indian Premier League - Lucknow Super Giants Cricket Team Records & Stats | ESPNcricinfo.com"۔ Cricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 11 اپریل 2023 
  36. "Indian Premier League - Gujarat Titans Cricket Team Records & Stats | ESPNcricinfo.com"۔ Cricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 31 مئی 2023